اپریل 16, 2015

ایک ایسی کہانی جول دل دہلا دے۔ کیا ہوتا اس بیٹے کے ساتھ جو خود بڑے ہوٹل میں کھانا کھانے جاتا ہے اور ماں کو خیراتی ادارے بھیجتا ہے




بیگم نے آئینہ میں لپ سٹک ٹھیک کرتے ہوئے کہا -:
"ماں جی، آپ اپنا کھانا بنا لینا،

مجھے اور انہیں آج ایک پارٹی میں جانا ہے ... !!

"بوڑھی ماں نے کہا -:" بیٹی مجھے گیس والا چولها چلانا نہیں آتا ... !!

"تو بیٹے نے کہا -: "ماں، پاس والے دربار میں آج لنگر ہے،
تم وہاں چلی جاؤ نہ کھانا بنانے کی کوئی نوبت ہی نہیں آئے گی .... !!!

"ماں چپ چاپ اپنی چپل پہن کر دربار کی طرف ہو چلی .....
یہ سارا واقعہ ان کا 10 سال کا بیٹا سن رہا تھا |

پارٹی میں جاتے وقت راستے میں اس نے اپنے پاپا سے کہا -:
"پاپا، میں جب بہت بڑا آدمی بن جاؤں گا نا تب میں بھی اپنا گھرکسی دربار کے پاس ہی بناؤں گا .... !!!

ماں نے اس کی وجہ پو چھی کیوں بیٹا؟

.... تو اس نے جو جواب دیا
اس سن کر اس کے ماں اور باپ کا سر شرم سے نیچے جھک
گیا جو اپنی ماں کو دربار میں چھوڑ آئے تھے .....

اس نے کہا -: کیونکہ ماں،
جب مجھے بھی کسی دن ایسی ہی کسی پارٹی میں جانا ہوگا تب تم بھی تو کسی دربار میں لنگر میں کھانا کھانے جاؤ گی نا اور میں نہیں چاہتا کہ تمہیں کہیں دور کسی دربار میں جانا پڑے .... !!!!

پتھر تب تک سلامت ہے جب تک وہ پہاڑ سے منسلک ہے.
پتہ تب تک سلامت ہے جب تک وہ درخت سے منسلک ہے
. انسان اس وقت تک سلامت ہے جب تک وہ خاندان سے منسلک ہے.

کیونکہ خاندان سے الگ ہو کر آزادی تو مل جاتی ہے ..
ایک قبر پر لکھا تھا ...

"کس کو کیا الزام دوں
دوستو ...،
زندگی میں ستانے والے بھی اپنے
تھے، اور دفن والے بھی اپنے تھے ...
.
نہ اپنوں سے کھلتا ہے،
نہ ہی غیروں سے کھلتا ہے.
یہ جنت کا دروازہ ہے،
میری ماں کے پیروں سے کھلتا ہے. !!

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget