اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

2 جون، 2015

چینی ماہرین نے امریکہ اور جاپان کو پیچھے چھوڑ دیا، حیرت انگیز ATM مشین ایجاد کرلی

 


بیجنگ (اُردو ائس آف پاکستان مانیٹرنگ) چینی ماہرین نے اپنی مہارت دکھا دی،  ماہرین اور  محققین نے کامیابی سے ایک ایسی آٹو ٹیلر مشین (اے ٹی ایم) تیار کرلی ہے  جس سے چور ی کے خطرات کم ترین سطح پر آگئے ہیں۔  ماہرین نے ایک ایسی مشین تیار کرلی ہے جوچہروں کو شناخت کرتی ہے۔ اور یہ دنیا کی پہلی مشین ہے جو انسانی چہروں کو شناخت کریگی۔ 

سنگھوا یونیورسٹی اور مشرقی چین کے جیانگ صوبے میں مالی لین دین کے لئے سیکورٹی تحفظ فراہم کرنے والی کمپنی تزیکوان ٹیکنالوجی نے یہ مشین تیار کی ہے۔ تزیکوان کے چیرمین گوزیکون جو کہ ایک جعلسازی کی روک تھام کرنے والی ٹیکنالوجی کے ماہر ہیں کہتے ہیں کہ یہ مشین اے ٹی ایم  سے متعلق جرائم کو ختم کردیگی۔ اور یہ پروڈکٹ پہلے  ہی تصدیقی مراحل سے کامیابی سے گزچکی ہے اور بہت جلد فروخت کے لئے دستایب ہوگی۔ 

چین اس وقت زیادہ تر درآمدشدہ  ATM ٹیکنالوجی پر انحصار کرتا ہے،مگر اب ایسا نہیں ہوگا ، یہ نئی مشین تیز رفتار بینک نوٹ ہینڈلنگ، جعلی بلوں کی شناخت اور چہرے کی شناخت  جیسی جدید ترین ٹیکنالوجیز کی حامل ہے ، اور مکمل طور پر چین میں تیار کی گئی ہے ۔ یہ پروڈکٹ حکام کی جانب سے تصدیقی سند حاصل کرچکی ہے اور جلد ہی مارکیٹ پر دستیاب ہو گی۔

بایومیٹرک اے ٹی ایمز  چلی اور کولمبیا جیسے ممالک میں استعال ہورہے ہیں  لیکن رازداری خدشات اور زیادہ قیمتوں کی وجہ سے امریکہ جیسے دیگر ممالک میں ان کو کوئی خاص پزیرائی نہ مل سکی۔ رازداری کی خدشات اور قیمت کی وجہ سے یہ مشینیں امریکہ اور دیگر ممالک میں استعمال نہیں کی جارہی ہیں۔





کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں