5 اگست، 2015

پاک آرمی نے اپنوں کو بھی نہیں بخشا، بڑوں کودی بڑی سزائیں

راولپنڈی (ٹائمز آف چترال مانیٹرنگ) پاکستان آرمی نے بدھ کو اپنے دو سابق جرنیلوں کو این ایل سی (نیشنل لوجسٹک سیل) میں خردبرد اور غبن کے کیس میں سزادی ہے۔ این ایل سی سکینڈل میں کرپشن کے الزامات ثابت ہوجانے کے بعد 2 سابق فوجی افسرا کو سزاسنادی گئی۔ ایک ریٹائرڈ میجر جنرل خالد ظہیر کو ملازمت سے برطرف کردیا گیا۔ نہ صرف یہ بلکہ ان کے رینک، میڈلز، اعزازات، تمام ایوارڈز بشمول پنشن تمام مراغات واپس لئے گئے ہیں۔ لیفٹنٹ جنرل (ر) افضل مظفر کے خلاف بھی سخت کاروائی عمل میں لائی گئی تاہم لیفٹنٹ جنرل ریٹائرڈ خالد منیرکسی مالی بے ضابطگی میں ملوث نہیں پائے گئے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات کے عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے این ایل سی میں مالی بے ضابطگیوں پر آرمی چیف کو ایکشن لینے کا کہا تھا جس کے بعد آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کیس کی تیز رفتار تحقیقات کا حکم دیا تھا۔

پاک فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ کیس میں پاک فوج نے انصاف و احتساب کی اعلیٰ روایات برقرار رکھیں اور دونوں افسران کو آرمی ایکٹ کے تحت سزا دی گئی ہے ۔ فروری 2009 میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے این ایل سی کی سرمایہ کاری میں بے ضابطگیوں کی نشاندی کرتے ہوئے آرمی چیف سے کارروائی کا کہا تھا جب کہ اس وقت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیرمین موجودہ وزیرداخلہ چوہدری نثار تھے۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget