اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

30 مئی، 2016

گورنمنٹ ہائرسیکنڈری سکول ہرچین لاسپورمیں باقاعدہ اسٹاف طعینات کرکے کلاسیں شروع کی جانی چاہئیں۔ عمائ دین یونین کونسل لاسپور

 

چترال (امیرنایاب : ٹائمز آف چترال 30مئی 2016) عمایدین یونین کونسل لاسپور سابق ممبر شراف الدین، سابق کونسلر نگاہ بن شاہ ، محمد شریف خان، سابق ناظم محمد قیوم شاہ، افسر خان، سابق کونسلر عدیر احمد خان، میرنیاب خان، شیر اعظم، آسماری خان، حاصل مراد، گلستان خان، صاحب جان، زار نبی خان، نادر، علاو ¿الدین، نیت حیدر، مس خان، غلام حیدر، شیر بہادر، میرزہ ولی، میرافضل خان، شہباز خان، جماعت خان اور اسلام الدین نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یونین کونسل لاسپو ر ضلع چترال کے نہایت دور افتادہ وادی ہے۔ قدرتی حسن اور محل و قوع کے لحاظ سے اس کی اپنی ایک اہمیت اور پہچان ہے۔ جشن شندور کے لیے جاتے ہوئے ہر کوئی اس علاقے گزرتا ہے اور علاقے سے واقف ہوجاتا ہے۔

مذکورہ وادی کی آبادی تقریباًپچیس ہزار تک ہے۔ یہان چند پرائیویٹ سکولز کے علاوہ چند گورنمنٹ سکولز بھی موجود ہیں۔ لیکں افسوس کی بات یہ ہے کہ اتنی بڑی آبادی کے لیے صرف ایک باقاعدہ ہائی سکول موجود ہے۔ اسی سکول سے سالانہ سینکڑون کی تعداد میں طلبہ و طالبات مٹرک پاس کرکے اعلیٰ تعلیم کے لئے کالجز اور یونیورسیٹیوں کا رخ کرتے ہیں۔ چونکہ سابقہ حکومت نے (سابقہ ایم پی اے حاجی غلام محمدکی کوششوں سے) اس علاقے میں ایک ہائرسیکنڈری سکول بنا رکھا ہے۔ سکول عمارت تیار ہوکر دو سال ہوچکے ہیں لیکن بدقسمتی سے کلاسوں کا ابھی تک اغاز نہیں کیا گیا ہے۔ 

عمایدیں نے وزیراعلیٰ خیبر پختواں خواہ، وزیر تعلیم ، سیکریٹری تعلیم ، ایم این اے اور ایم پی ایز چترال سے اپیل کرتے ہیں کہ روان سال ہی اس سکول کے لیے سٹاف مقرر کرکے باقاعدہ کلاس کا آغاز کراکے صوبائی حکومت اپنی علم دوستی کا ثبوت دے تاکہ اس علاقے کے بچے بھی علم کے زیور سے آراستہ ہوتے رہیں گے۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں