میں قبر اندھیری میں گھبراؤں گا جب تنہا . امداد میری کرنے آجانا میرے آقا ﷺ: امجد صابری وہ آخری دعائیہ کلام جو سحری میں گایا تھا

اے سبز گنبد والے ﷺمنظور دعا کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
اے نورِ خُدا آکر آنکھوں میں سما جانا
یا در پہ بُلا لینا یا خواب میں آجانا
اے پردہ نشیں دل کے پردے میں رہا کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
میں قبر اندھیری میں گھبراؤں گا جب تنا 
امداد میری کرنے آجانا میرے آقا ﷺ
روشن میری تربت کو اے نورِ خُدا ﷺ کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
مُجرم ہوں جہاں بھر کا محشر میں بھرم رکھنا
رُسوائے زمانہ ہوں دامن میں چُھپا لینا
مقبول دُعا میری اے نورِ خُدا کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
چہرے سے ضیاء پائی ان چاند ستاروں نے
اس در سے شفاء پائی دکھ درد کے ماروں نے
آتا ہے اُنہیں صابرؔ ہر دُکھ کی دوا کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
اے سبز گنبد والے منظور دعا کرنا
جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا


#AmjadSabri we miss you
جناب امجد صابری نے 22 جون کی سحری میں یہ دعائیہ نعت پڑھی تھی۔۔۔۔ اور اللہ نے دعا قبول فرمائی یا در پہ بُلا لینا یا خواب میں آجانا اے پردہ نشیں دل کے پردے میں رہا کرنا جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا میں قبر اندھیری میں گھبراؤں گا جب تنا امداد میری کرنے آجانا میرے آقا ﷺ روشن میری تربت کو اے نورِ خُدا ﷺ کرنا جب وقتِ نزع آئے دیدار عطا کرنا
Posted by The Times of Chitral on Wednesday, June 22, 2016

Post a Comment

Thank you for your valuable comments and for taking the time to point out options to improve our service. Please have your opinion on this post below.

Previous Post Next Post