3 جولائی، 2016

چترال کے علاقے ارسون میں رات گئے بدترین سیلاب، جان بحق افراد کی تعداد 23 ہوگئی، 4 بچے میاں بیوی بھی شامل، دریائے چترال جھیل بن گیا، دیہات ڈوب گئے

 

(تازہ اپ ڈیٹس) چترال کے علاقے ارسون کے گائون پائتاسون گول میں سیلاب سے ہلاک اور لاپتہ ہونے والے افراد کی تعداد 23 ہوگئی۔ جن میں 4 بچے اور میاں بیوی بھی شامل ہیں۔ سیلاب نے مسجد اور متعدد گھروں کو بہا کر لے گیا۔ ادھر نگر کے مقام پر سیلابی ریلے نے دریائے چترال کو روک رکھا ہے جس کے باعث دریائے چترال جھیل کا منظر پیش کررہا ہے۔ دریا کے کنارے کئی گھر پانی میں ڈوب گئے ہیں۔ گھروں کو مکینوں سے خالی کرالیا گیا ہے۔ انخلا کا عمل جاری۔ مزید کئی گھر متاثر ہونے کا خدشہ ہے۔  (فائل فوٹوہے)

چترال کے علاقے ارسون میں رات گئے سیلاب، 17 افراد جان بحق 10 کی لاشیں نکال لی گئیں، متعدد افراد لاپتہ: پولیس

چترال /دروش ( نمائندہ ٹائمز آف چترال 3 جولائی 2016) ہفتے کی شب پاکستان اور افغانستان کی سرحد کے قریب ارسون گائوں کے پائیتاسون گول میں سیلاب آگیا۔ سیلاب نماز تراویح کے دوران آیا۔ پائیتاسون گاون میں واقع مسجد کو بہا کر لے گیا۔ سیلاب اس وقت آیا جب لوگ نماز تراویح میں مصروف تھے۔ پولیس کے مطابق 17 افراد واقعے کے بعد لاپتہ ہوگئے تھے ، جن میں سے 10 کی لاشیں نکال لی گئیں ہیں۔ باقیوں کے بارے میں خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ سیلاب میں بہہ گئے ہیں۔ رات ہونے کی وجہ سے امدادی سرگرمیوں میں دشوایاں پیش آرہی ہیں۔ بڑے سیلابی ریلے نے نغر کے قریب دائے مستوج/چترال کو روک رکھا ہے جس کی وجہ سے دریائے چترال کی سطح بلند ہونا شروع ہوئی ہے اور دریا کے کنارے واقع کئی آبادیوں میں پانی گھس جانے کا خدشہ ہے۔ شام سے دروش اور اردگرد کے علاقوں میں بارش اور تیز ہواوں کا سلسلہ جاری ہے۔ راستے بند ہوجانے کی وجہ سے پولیس اور امدادی رضاکار متاثرہ گاوں تک نہیں پہنچ پائے ہیں۔ خبر جاری ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget