23 اکتوبر، 2016

حبیب بینک کوٹیکس دینے کے بعد25 ارب روپے کا منافع، شیئر ہولڈرز کے لئے بڑا اعلان

 

کراچی:  ایچ بی ایل نے سال 2016 کے پہلے 9 ماہ کے مالیاتی نتائج میں فی حصص آمدن 17.47 روپے کے ساتھ 25.8 ارب روپے کا بعد از محصول منافع کا اعلان کیا ہے۔ ان نتائج کے ساتھ بینک نے تیسری سہ ماہی کے لئے 3.5 روپے فی حصص (35 فیصد) دینے کا اعلان کیا ہے ۔ 


ایچ بی ایل کی بیلنس شیٹ دسمبر 2015 کے مقابلے میں 7 فیصد اضافے سے 2.4 کھرب روپے ہوگئی ہے۔ کرنٹ اکاو ¿نٹ سیونگ اکاو ¿نٹ (CASA) کے مقامی ڈپازٹس میں 9 فیصد اضافہ ہوا جبکہ 30 ستمبر تک کرنٹ اکاو ¿نٹ سیونگ اکاو ¿نٹ مکس میں 89 فیصد بہتری آئی۔مقامی ڈیپازٹس مکس میں بہتری کا سلسلہ جاری رہا اور اب 35.6 فیصد ڈیپازٹس کرنٹ اکاو ¿نٹس پر مبنی ہیں۔ سال 2016 کے ابتدائی 9 ماہ میں اوسط کرنٹ اکاو ¿نٹس میں سال 2015 کے اسی عرصے کے مقابلے میں 19 فیصد اضافہ ہوا ہے جس کی بدولت ایچ بی ایل مقامی ڈیپازٹس کی لاگت میں کمی لانے کے قابل ہوا۔ تمام شعبہ جات میں اوسط مقامی قرضوں کے اضافے کے ساتھ بینک کی خالص مارک آپ آمدن سال 2016 کے پہلے 9 ماہ میں 7 فیصد اضافے سے 62.2 ارب روپے ہوگئی ہے۔ 

فیس اور کمیشن کے حصول میں بھی بہتری کا سلسلہ جاری ہے اور اس مد میں سال 2016 کے پہلے 9 ماہ کے دوران 18 فیصد اضافے سے 13.7 ارب روپے کا اضافہ ہوا۔ بنکاشورنس، ٹریڈ، انویسٹمنٹ بینکنگ اور جنرل بینکنگ سے متعلق فیسوں سے حاصل آمدن میں نمایاں کردار ادا کیا ۔ بہتر وصولیوں کے ساتھ بینک سال 2015 کے ابتدائی 9 ماہ کے مقابلے میں پرو ویژن میں بھی 58 فیصد کمی لانے کے قابل ہوگیا۔ جبکہ سال 2015 میں اسی عرصے کے مقابلے میں انتظامی اخراجات 10 فیصد تک محدود رہے۔ غیر فعال قرضوں کی شرح کوریج گزشتہ سہ ماہی کے مقابلے میں 30 ستمبر 2016 تک 90 فیصد تک ہوگئی۔ 

ایچ بی ایل نئی اور جدید سہولیات کی فراہمی کے لئے پرعزم ہے اور سال کے اوائل میں وہ پاکستان کا پہلا بینک بن گیا جس میں صارفین موبائل ایپ کے ذریعے بائیو میٹرک سے سائن ان ہو سکتے ہیں۔ بینک اپنی سروس کی سطح میں مسلسل بہتری لانے کے لئے کام کررہا ہے تاکہ اپنے صارفین کے تجربے میں پہلے سے زیادہ بہتری لائی جائے۔ ایچ بی ایل نے تقریبا 2 ہزار اے ٹی ایمز(ATMs)، 14 ہزار سے زائد پی او ایس (POS)مشینز نصب کیں جو مختلف اقسام کے صارفین کو باسہولت رسائی فراہم کرتے ہیں۔ 

مجموعی کیپٹل ایڈوکیسی ریشو (CAR) 30 ستمبر 2016 تک 16.4 فیصد رہا جبکہ ٹیئر 1 کیپیٹل ایڈوکیسی ریشو 12.7 فیصد رہا جو مذکورہ بالا ریگولیٹری اتھارٹی سے زاید ہے۔ رواں سال JCR-VISکی جانب سے بینک کی کریڈٹ ریٹنگ AAA/A-1+ بالترتیب طویل المیعاد اور مختصر المیعاد دورانئے کے لئے دوبارہ توثیق کی ہے جو ایچ بی ایل کے بہترین لیکویڈیٹی پروفائل اور بینک کی منظم اہمیت کی عکاس ہیں۔ 

ایچ بی ایل نے ٹھوس نتائج کی فراہمی کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔ بڑھتے ہوئے مارکیٹ سرمائے اور بنیادی سرمائے کے ساتھ بینک سب سے بڑے کمرشل بینک کے طور پر ترقی کے مواقع سے فائدہ اٹھانے کے لئے تیار ہے اور پاکستان کے وسیع ترین بینک کی حیثیت سے بینک پاکستان کی ترقی میں بھی کردار نبھانے کے لئے تیار ہے۔ 

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget