دسمبر 13, 2016

میرزا گل کی بچ جانے والی واحد 14 سال کی بیٹی، حسینہ موبائل پر پیاروں کی تصویریں دیکھ آہیں بھرتی رہتی ہے

 


تحریر ابوالحسین

قومی ایئر لائن کے طیارے کے المناک حادثے میں میرزگل کا پورا خاندان دنیا سے چل بسا۔ جسے اللہ رکھے اسے کون چکھے، یہ تو ہر مسلمان کے ایمان کا حصہ ہے۔ میرزگل اپنے 4 بچوں اور اہلیہ کو لیکر جس وقت اسلام آباد سفر کی تیاری
کررہے تھے۔ اس دن ان کے گھر کا ماحول کچھ اور منظر پیش کر رہا تھا، ان کی 14 سال کی بیٹی حسینہ بی بی کے دل میں اللہ نے ایسا کیا ڈال دیا تھا کہ حسینہ بی بی اس سفر کے لئے راضی نہیں ہورہی تھی اور وہ ان کے ساتھ اسلام آباد جانے کے لئے کسی صورت تیار نہ ہوئی۔ اور یوں میرزا چاچا اپنے دیگر 4 بچوں اور اہلیہ کو لیکر عزیزوں اور محلے داروں کو خدا حافظ کہہ کر سفر پر نکل پڑے۔ بچے اور اہلیہ چونکہ پہلی بار شہر کی طرف جارہے تھے اس لئے ان کی خوشی بھی دیدنی تھی۔ لیکن کیا خبر۔۔۔

حسینہ بی بی کی عمر 14 سال ہے اور حادثے میں وفات پانے والے ان کے پیاروں کی شناخت کے لئے ڈی این اے ٹیسٹ کے لئے سیمپل دینے کے لئے انہیں اسلام آباد لایا گیا ہے حسینہ ابھی ساتویں کلاس کی طالبہ ہے۔ حسینہ کی حالت دیکھ کر ہر آنکھ اشکبار ہوجاتاہے۔ حسینہ کا اب اس دنیا میں یادوں کے سوا کوئی نہ بچا۔ حسینہ اپنے موبائل پر ہر وقت اپنے بچھڑ جانے والے پیاروں کی تصویریں دیکھتی اور لمبی آہیں اور سسکیاں بھرتی رہتی ہے۔ حسینہ کا وہ سرمایہ جس پر اس دل بڑا اور
قلب مطمئن تھا، وہ سب جو اس کی بہتر مستقل کا ضامن تھا اب یہ سب کچھ صرف تصویروں کی شکل میں اس کے موبائل میں موجود ہیں جو جسمانی طور پر انہیں چھوڑ کر دوسری دنیا پہنچ چکے ہیں۔

ہماری دعا ہے اللہ رب تعالی حسینہ کو ہمت عطا فرمائے اور اس ناقابل تلافی نقصان کو سہنے کی اعلیٰ حوصلہ دے۔ اور ہمیں اور ان کے آس پاس رہنے والے کو ان کی حفاظت اور پرورش کی توفیق عطا فرمائے۔ امین

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget