11 دسمبر، 2016

اب تک 47 میں سے صرف 9 میتوں کی شناخت ہوگئی، ورثاء کے حوالے

 



اسلام آباد (ویب ڈیسک) طیارے کے حادثے میں جاں بحق ہونے والے 47 افراد میں سے صرف 9 میتوں کی شناخت ہوچكی ہے شناخت کے بعد میتوں کو ورثاء كے حوالے کردیا گیا۔ حادثے میں جاں بحق ہونے والے پاكستانیوں كے ڈی این اے ٹیسٹ کے لیے سیمپلنگ كا مرحلہ مكمل کرلیا گیا ہے جب كہ ایك غیر ملكی چینی باشندہ ہان كیانگ كے بھائی نے میت كے حصول کے لیے PIMS انتظامیہ سے رابطہ کیا ہے اور ڈی این اے کے لیے نمونے جمع كرادیئے ہیں دیگر 2 غیر ملكیوں كے لواحقین تاحال اسپتال انتظامیہ رابطہ نہیں كیا ہے، ڈی این ٹیسٹ كا عمل جلد مكمل كرنے كے لیے سركاری تعطیلات نہیں كی جائیں گی، اتوار اور پیر كو بھی ڈی این اے ٹیسٹس كا عمل جاری رہے گا۔ ہسپتال انتظامیہ کے مطابق اب تک صرف 9 میتوں کی شناخت ہوگئی جنہیں ان کے ورثاء کے حوالے کردیا گیا ہے، ان میں ایئر ہوسٹس عاصمی عادل، صدف ، ڈپٹی کمشنر چترال اسمامہ احمد وڑائچ، محمد تکبیرخان، حاجی نواز، ماہ رخ احمد، احسن اور آمنہ احمد شامل ہیں۔ تمام میتوں کے ڈی این این ٹیسٹ پمز کے زیر انتظام ہورہے ہیں، انتظامیہ کی کوشش ہے کہ ٹیسٹ کا عمل جلد مکمل ہو تاکہ ورثاء کو ان کی میتیں حوالے کئے جاسکیں

نمائندہ ایكسپریس كو تفصیلات بتاتے ہوئے پاكستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیكل سائنسز(پمز) كے ایڈمنسٹریشن ڈاكٹر الطاف نے بتایا كہ اب تك مجموعی طور پر جن 9 میتوں کو شناخت کے بعد ان کے لواحقین کے حوالے کیا گیا ان میں ایئر ہوٹس صدف اور عاصمی عادل، ڈپٹی كمشنر چترال اسامہ احمد وڑائچ، محمد تكبیر خان، حاجی نواز، ماہ رخ احمد، احسن اور آمنہ احمد شامل ہیں۔ انہوں نے بتایا كہ شناخت نہ ہو سكنے والی باقی 38 میتوں كو روات كے قریب نجی كولڈ سٹوریج میں ركھا گیا ہے، میتوں كے ڈی این اے ٹیسٹ پمز كے زیر انتظام اسلام آباد كے لیبارٹریوں میں كیا جارہا ہے، كوشش ہے ڈی این اے ٹیسٹ كا عمل جلد مكمل ہو تا كہ میتیں لواحقین كے حوالے كی جا سكیں۔ پمز کے ڈاکٹر الطاف کہتے ہیں کہ ڈی این اے ٹیسٹ كا عمل جلد مكمل كرنے كے لیے سركاری تعطیلات نہیں كی جائیں گی، اتوار اور پیر بھی كو ڈی این اے ٹیسٹ كا عمل جاری رہے گا ، رپورٹس آنے پرلاشیں لواحقین كے حوالے كرنے كا سلسلہ شروع ہوجائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ ڈی این اے ٹیسٹ كے لیے سیمپل صرف ماں باپ بہن بھائی اور بچے دے سكتے ہیں ، ڈی این اے ٹیسٹ كے لیے 6 سے 8 دن دركار ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget