23 جنوری، 2017

ٹائمز آف چترال کے سروے کے مطابق چترال کے مختلف علاقوں میں موبائل سروس کا معیار: مکمل معلومات کے لئے پوری رپورٹ پڑھیں

 

ٹائمز آف چترال کے سروے کے مطابق چترال کے مختلف علاقوں میں موبائل سروس کا معیار: مکمل معلومات کے لئے پوری رپورٹ پڑھیں

ٹائمز آف چترال نے چترال کے مختلف علاقوں میں موبائل فون سروس کے معیار کوجانچنے کے لئے اپنے فیس پیج کے ذریعے صارفین کی رائے جانی۔ جس میں چترال کے مختلف علاقوں سے موبائل فون صارفین نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ اور اپنے علاقوں میں موبائل فون سروس کے معیار سے آگاہ کیا۔ جس کے تحت درجہ ذیل رپورٹ تیارکی گئی ہے:

ای ایف شانی نے بتایا کہ : کوغذی میں ٹیلی نار کا ٹاور ایک اونچے پہاڑ کے اوپر نصب کیا گیا ہے جو کہ موری بالا ,موری پائیں ,موری لشٹ ,استانگول اور کوغذی و برغذی گاؤں کو سروس فراہم کرتا ہے- صارفین کی کثرت اور اونچائی پر ہونے کی وجہ سے کوغذی میں ٹیلی نار کا نیٹ ورک انتہائی ناقص ہے- آپ کے اس فورم کی توسط سے ہماری ٹیلی نار کمپنی سے گزارش ہے کہ براہ کرم کوغذی کے اندر ہی ایک اضافی ٹاور لگا دیا جائے تاکہ ٹیلی نار صارفین کو مشکلات کا سامنا کرنا نہ پڑے-

ریشن سے وسیم اکرم بیگال نے لکھا ہے کہ وارد سروس اچھا ہے۔ ٹلی نار کی سروس شروع ہوئے تھوڑے دن ہوئے ہیں لیکن کسی سے رابطہ نہیں کرسکا ہوں۔ ماشاء اللہ

حاجی غلام رسول کا کہنا کہ چترال میں سروس فراہم کرنے والی تمام کمپنیاں بشمول ٹیلی نار کی سروس بہت ہی خراب ہے انہیں اپنی سروس بہتر کرنی چاہئے۔

تورکہو سے تعلق رکھنے والے ابو اویس کہتے ہیں کہ ہمارے علاقے تورکہو ملپ میں 50 نمبروں کا ٹاور نصب ہے لیکن یہ بھی گزشتہ 2 ماہ سے خراب ہے، کمپنی والوں کا کچھ پتہ نہیں اس وجہ سے عوام کو بہت مشکلات کا سامنا ہے، ہماری خبر ٹیلی نار حکام تک پہنچائیں آپ کی مہربانی ہوگی۔ ( انہوں نے کمپنی کا نام نہیں بتایا ہے عالباً وہاں بھی ٹیلی نار ہے)

ریشن سے محمد ایاز محمود لکھتے ہیں کہ ریشن اور اس کے مضافاتی علاقوں میں وارد نیٹ ورک کام کرتا ہے لیکن سگنل کافی کمزور ہیں۔

شاہ فیروز کہتے ہیں کہ ٹیلی نار پاکستان کی 2 جی انٹر نیٹ سروس صحیح نہیں کام کر رہا، اب علاقے میں 3 جی سروس ہونی چاہئے۔

مول کہو سے حبیب اللہ شاہ لکھتے ہیں کہ ہمارے علاقے مول کہو میں ٹیلی نار کی سروس ہے لیکن سگنلز بہت کمزور ہونے کی وجہ سے کال کرنے کے لئے گھر سے باہر جانا پڑتا ہے۔

کوعذی سے ایف ایف شاہ کہتے ہیں کہ ٹلی نار کی سروس 50 فیصد اور وارد کی 100 فیصد ہے۔

تور کہو کے علاقے شاگرام سے نعیم نے لکھا ہے کہ ٹیلی کی سروس ہے مگر بائے نام ہے۔ سب سے گھٹیا سروس ہے۔

سروے میں شریک زیادہ تر صارفین نے ٹلی نار کو بدترین نیٹ ورک قرار دے دیا جبکہ وارد قدرے بہترین نیٹ ورک قرار پایا ہے۔ وارد کی سروس جہاں جہاں موجود ہے سروس کا معیار بہتر ہے۔ جبکہ ٹیلی نار کی سروس جہاں ہے بھی تو نہ ہونے کے برار ہے۔ سروے میں کسی صارف نےجاز، زونگ اور یوفون کا نام نہیں لیا۔ اس کی وجہ یہ بھی ہے کہ یہ تینوں نیٹ ورک دروش شہر، چترال خاص (چترال سٹی) اور بونی میں دستیاب ہیں۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget