25 جنوری، 2017

منگل کے روز حسب معمول لواری سرنگ کو مسافروں کیلئے نہیں کھولا گیا۔ سیکنڑوں مسافروں کو مشکلات کا سامنا۔

 



چترال(گل حماد فاروقی) شدید برف باری کے باعث چترال کا واحد زمینی راستہ لواری ٹاپ ہر قسم ٹریفک کیلئے بند ہوا ہے جبکہ لواری ٹاپ کے پہاڑ کے بیچ میں بننے والی لواری سرنگ کو مسافروں کیلئے ہفتے میں پہلے ایک روز اور بعد میں دو دن کھولنے کا اعلان کیا گیا تھا۔ تاہم منگل کے روز چترال سے پشاور جانے والے اور پشاور سے چترال آنے والے سینکڑوں مسافروں کو اس وقت نہایت مایوسی کا سامنا کرنا پڑا جب وہ لواری ٹنل کے سامنے پہنچ گئے تو ان کا پولیس کے ساتھ مڈھ بیر ہوا۔ 

عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ پشاور سے چترال جانے والے سیکنڑوں مسافر گاڑیاں جب لواری سرنگ کے سامنے پہنچ گئے تو دیر پولیس نے ان کو بغیر اطلاع روک دئے جس پر پولیس اور مسافروں کے درمیا ن جھڑپ بھی ہوئی۔ دیر پولیس نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ان کو نیشنل ہائی وے اتھارٹی نے منگل کے روز ہی بتایا کہ لواری سرنگ کے راستے برف کو صاف نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے یہ راستہ منگل کے روز مسافروں کیلئے بند رہے گا جس پر چند مسافروں نے احتجاج کرتے ہوئے نعرہ بازی کی اور دیر پولیس نے جوابی کاروائی کرتے ہوئے ان کے درمیان معمولی جھڑپ بھی ہوئی۔

ہمارے نمائندے نے دیر میں واقع این ایچ اے حکام سے فون پر بار بار رابطہ کرنے کی کو شش کی تاکہ ان کی موقف بھی جان سکے کہ حسب وعدہ لواری سرنگ کو مسافروں کیلئے منگل کے روز کیوں نہیں کھول دیا گیا مگر ان کا نمبر مسلسل مصروف رہا۔

واضح رہے کہ چترال کا واحد زمینی راستہ لواری ٹاپ شدید برف باری کے باعث ہر قسم ٹریفک کیلئے بند ہوا ہے تاہم مسافروں کو لواری سرنگ کے اندر ہفتے میں دو دن جمعہ اور منگل کے روز سفر کی اجازت دی جاتی ہے مگر حسب معمول جب مسافر گاڑیاں پشاور سے دیر پہنچ گئے تو ان کو دیر انتظامیہ نے لواری سرنگ کے اندر جانے سے روک دیا کیونکہ برف باری کی وجہ سے راستہ بند تھا اور حکام نے ابھی تک راستہ صاف نہیں کیا ہے۔ جس کی وجہ سے سینکڑوں مسافروں کو جن میں بچے اور خواتین بھی شامل ہیں ان کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ 
مسافروں نے مطالبہ کیا ہے کہ اگر لواری سرنگ کو کسی وجہ سے اس کے معمول کے دنوں میں نہیں کھولا جاتا تو حکام کو چاہئے کہ پہلے سے اعلان کرکے مسافروں کو پشاور اور چترال میں آنے سے روک دیں تاکہ وہ لواری سرنگ کے سامنے بے سرو سامانی کی حالت میں بھوک و پیاس کا شکار نہ ہو کیونکہ یہاں پر ضروریات زندگی کی کوئی سہولت موجود نہیں ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget