فروری 5, 2017

چترال کے مختلف علاقوں میں برفانی تودے گرنے سے 14 افراد جان بحق، لوگ کئی روز سے گھروں میں محصور ،کئی فٹ برف پڑ چکی ہے

 

چترال کے مختلف علاقوں میں برفانی تودے گرنے سے 14 افراد جان بحق، لوگ کئی روز سے گھروں میں محصور ،کئی فٹ برف پڑ چکی ہے


چترال (نمائندہ ٹائمز آف چترال )  چترال، لوٹ کوہ تحصیل کے کریم آباد کے علاقے شیرشال میں برفانی تودے 20 گھروں پر آگرے جس کی وجہ سے اب تک 14 افران جان بحق ہوگئے ہیں، جن میں 6 خواتین، 6 بچے اور 2 مرد شامل ہیں۔ قدری آفت میں 9 سے زائد افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں گرم چشمہ سول ہسپتال پہنچا دیا گیا ہے۔ کئی جگہوں پر 4 فٹ یا اس سے بھی زیادہ برف پڑی ہے۔ جس سے نظام زندگی مکمل طور پر مفلوج ہوکر رہ گئی۔ آمدرفت ک نظام مکمل طور پر ٹوٹ چکا ہے۔ شیرشال کے مقام پر برفانی تودہ رات کے  3 بجے گرا ۔ جس کی وجہ سے رات کے اندھیرے میں لوگ جان بچانے میں ناکام رہے۔ 


دامیل کے مقام پر برفانی تودہ چترال سکاوٹ کے ایک چیک پوسٹ پر آگرا جس کے نتیجے میں ایک اہلکار شہید جبکہ 6 زخمی ہوگئے۔  چترال سکاوٹ کے کمانڈنٹ کرنل نظام الدین شاہ نے میڈیا کو بتا یا کہ اب تک 14 لاشیں نکالی گئیں ہیں، متاثرہ علاقے میں امدادی کام جاری ہے۔  

شیرشال  میں 25 گھر برفانی تودے کے نیچے دب گئے ہیں، جن میں 5 گھر مکمل طور پر تباہ ہوچکے ہیں۔ برف باری کا سلسلہ جاری ہے جس کی وجہ سے کچھ علاقوں میں قدرتی آفات  سے بچنے کے لئے لوگ محفوث مقامات پر منتقل ہوگئے ہیں۔  شیرشال میں این ڈی ایم اے اور چترال سکاوٹ کے اہلکار امدادی کام سر انجام دے رہے ہیں۔


چترال کے مختلف علاقوں میں موجود ذرائع کے مطابق مختلف علاقوں میں  مثلا بونی میں 33 انچ، تورکہو میں 46 انچ، ریشن  40 انچ، موڑ کہواور کوشٹ میں 36،  چترال ٹاون میں 25 انچ ، بروغل میں سے زیادہ 60 انچ، کوشم اور لاسپور میں 56 انچ اور لوٹ کہو میں 48 انچ برف پڑچکی ہے۔ بھاری برف باری کی وجہ سے درخت زمین بوس ہوگئے ہیں۔  تقریبا تمام علاقوں سے یہی اطلاعات ہیں کہ درخت سب سے زیادہ متاثر ہوئے ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget