2 فروری، 2017

جماعت الدعوہ سربراہ حافظ سعید سمیت 38 افراد کے نام حکومت نے ایگزٹ کنڑول لسٹ پرڈال دیئے ، ملک چھوڑنے پرپابندی

 



اسلام آباد ( آن لائن ) وزارت داخلہ نے جماعت الدعوہ کے سربراہ حافظ سعید سمیت 38 سرکردہ رہنمائوںکے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈال دیئے گئے ۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق وزارت داخلہ نے جماعت الدعوة اور لشکر جھنگوی کے 38 سرکردہ رہنمائوں کے نام ای سی ایل میں ڈالے ہیں جن کا تعلق لاہور، گجرانوالہ، کراچی، کوہاٹ، چترال، آزاد کشمیر اور دیگر علاقوں سے ہے۔دوسری جانب وزارت داخلہ کے ترجمان نے حافظ سعید کی نظربندی کے حوالہ سے بھارت کی وزارت خارجہ امور کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حالیہ اقدامات پر پاکستان کو بھارت سے کسی سرٹیفکیٹ یا توثیق کی ضرورت نہیں۔ 

ترجمان نے کہا کہ حکومت پاکستان نے جماعت الدعوة کے بارے میں دسمبر 2008ء میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 1267 کی روشنی میں اپنی ذمہ داریاں پوری کی ہیں، متعلقہ قرارداد کے تحت ہتھیاروں و سفر پر پابندی اور اثاثے منجمد کرنے جیسے مختلف اقدامات اٹھائے جانے تھے تاہم سابقہ حکومتوں کی جانب سے بعض وجوہات کی بنا پر ایسا نہ کیا گیا۔ ترجمان نے کہا کہ بھارت حافظ سعید کی سرگرمیوں کو مسلسل پاکستان کو بدنام کرنے کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔ بین الاقوامی برادری کو اس کا نوٹس لینا چاہئے اور اس بات سے آگاہ ہونا چاہئے کہ پاکستان ایک جمہوری معاشرہ ہے جہاں عدلیہ آزاد ہے جو آزادانہ اور شفاف فیصلے کرتی ہے۔ 

ترجمان نے کہا کہ اگر واقعی بھارت اپنے الزامات پر سنجیدہ ہے تو اسے حافظ محمد سعید کے خلاف ٹھوس ثبوت دینے چاہئیں جو پاکستان کی عدالت یا دنیا میں کہیں بھی قابل قبول ہوں۔ کسی ٹھوس ثبوت کے بغیر الزام تراشی سے خطہ میں امن کے نصب العین میں مدد نہیں ملے گی۔ ترجمان نے مزید کہا کہ پاکستان بھارت سے ابھی تک اس بارے میں وضاحت اور جواز کا منتظر ہے کہ سمجھوتہ ایکسپریس پر بم حملہ جس میں 68 پاکستانی شہری جاں بحق ہوئے، میں ملوث تمام ملزمان کس طرح رہا ہو گئے ہیں۔ سمجھوتہ ایکسپریس پر دہشت گرد حملہ میں بھارتی فوجی افسر لیفٹیننٹ کرنل پرشاد سری کانت پروہت اور راشٹریہ سوامی سیوک سنگھ کے سوامی اسیما نند جیسے ہندو انتہاء پسند رہنمائوں کا ملوث ہونا ریکارڈ پر ہے جو بھارت کی طرف سے کسی مثبت ردعمل کے بغیر بین الاقوامی پریس میں وسیع انداز میں رپورٹ ہو چکا ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget