مارچ 9, 2017

غریب بچوں اور بچیوں کے شیلٹر ہوم میں آتشزدگی، 22 لڑکیاں جل کر ہلاک

 

(ویب ڈیسک) گوئٹے مالا  کے سان جوز پنولہ میں واقع غریب و نادار اور استحصال کا شکار بچوں اوربچیوں کے شیلٹر ہوم
کو مشتعل افراد نے آک لگاری جس کے نتیجے میں 22 لڑکیاں جل کر جان بحق ہوئیں جبکہ 40 سے زائد افراد اس واقعے میں زخمی ہیں۔  یہ ایک حکومتی سرپرستی میں چلنے والا شیلٹر ہوم ہے ۔ پولیس کے مطابق ہوم میں قایم پذیر کچھ افراد یہاں سے بھاگ کی کوشش کی ہے اور بھاگنے کے لئے انہوں نے شیلٹر کو آگ لگانے کی کوشش کی، ان شر پسندوں نے شیلٹر میں موجود میٹرس کو آگ لگادی، یہاں پر 18 سال سے کم عمر بچے بچیاں رہائش پذیر ہوتے ہیں۔

مقامی ہسپتال انتظامیہ کے مطابق ہلاک شدگان کے علاوہ 40 افراد جھلس کر زخمی بھی ہوئے ہیں جو زیر علاج ہیں۔ گوئٹے مالا نیشنل پولیس کے سربراہ نیری راموز نے حادثے سے متعلق کہا کہ شیلٹر انتظامیہ نے کچھ عرصہ قبل جھگڑے کی واجہ سے کچھ نوجوانوں کو علیحدہ رکھا تھا جو شیلٹر سے فرار ہونے کے لئے اسے آگ گادی۔ پولیس چیف کے مطابق ان مشتعل افراد نے شیلٹر میں موجود  ایک میٹرس کو آگ لادی تھی ، جس کے باعث آگ بھڑک اٹھی۔  نیری راموز کا مزید کہنا تھا کہ انتظامیہ ابھی اس حوالے سے تفتیش میں مصروف ہے کہ کیا شیلٹر سے بھاگنے والے افراد ہی آگ لگانے میں ملوث ہیں یا ایسا کسی اور کی جانب سے کیا گیا۔

گوئٹے مالا کے صدر جمی مورالز نے واقعے کے بعد ملک میں 3 روزہ قومی سوگ کا اعلان کیا ۔ گوئٹے مالا کے مقامی میڈیا کے مطابق '  Virgen de Asuncion نامی اس شیلٹر ہوم میں گنجائش سے زائد افراد کو رکھا گیا تھا، جبکہ یہاں رہنے والے بچوں کے رشتے داروں نے الزام عائد کیا ہے کہ سینٹر میں بچوں کے ساتھ بدسلوکی ایک عام بات تھی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget