اپریل 5, 2017

دروش کے ولیج ناظمین کا ہنگامی اجلاس: چار نکات پر قرارداد منظور

 


رپورٹ فہیم اللہ فہمی

آج بروز منگل بمورخہ 4 اپریل 2017 کو بمقام وی سی آفس لاوی دروش سے تعلق رکھنے والے ویلچ ناظمین نائب ناظمین کونسلر و دیگر عمائدین کا ایک ہنگامی اجلاس زیر صدارت جناب امیر فیاض منعقد ہوئی -قاری عبدالمجید صاحب کی طرف سے تلاوت کلام پاک کے فورآبعد اجلاس کی کارروائی شروع ہوئی - موضع بحث تھی دروش ٹیکسی آڈہ کارپارکنگ جس پر تمام شرکانے کھل کر اظہار خیال کیا اور آخر میں حسب ذیل قرارداد متفقہ طور پر منظور ہوئی - 

(1) یکہ دروش شہری ائریا سے عرصہ 1980 سے دروش کے مختلف علاقوں کو یعنی مڈکلشت سے لیکر ارندو تک اور عشریت سے لیکر گہریت بریر تک کے علاقوں کیلئے ٹیکسی کارپارکنگ عوام دروش کی سہولیت کیلئے چار عدد آڈہ پر ائیرپورٹ جائیدادرہ میں تعین شدہ ہیں -عوام دروش اور ٹیکسی ڈرائیور حضرت مزکورہ آڈوں سے بھرپوراستعفادہ پر امن طور پر کرتے آرے ہیں کسی کو کوئی شکایت نہیں ہے - 

(2) یکہ اگر کوئی شہری اپنی جائیداد پر ایک آڈہ مزید کھولنا چاہئے تو وہ اس قانونی حق ہے اسکو کوئی نہیں روک سکتا ہے جسطرح سابقہ مزکورہ آڈھے آباد ہوئے وہ بھی روز بروز آباد ہوتا جائیگا ورکشابین وہاں آباد - ٹیکسی پارکنگ بھی وہاں آباد ہونا شروع ہوجائیگے - کیونکہ آبادی بڑھ رہی ہے اور گاڑیاں بھی زیادہ ہوتی جارہی ہیں - لیکن مجسٹریٹ صاحب نئی وجود میں آنے والی کوٹ گارڈ کو وقت سے بہت پہلے آباد کرنا چاہ رہا ہے اور عوامی سہولت کے کار پکنگز سے عوام کو اور متعلقہ ڈرائیورں کو یکسر منتقل ہونے پر مجبور کررہا ہے جوکہ عوام دروش کو قبول نہیں مزکورہ آڈہ دروش بازار سے کافی فاصلہ پر واقع ہے بازار دروش سے سامان اٹھا کر وہاں لے جانا اور وہاں سے سامان اٹھا کر بازار دروش لانا عوام دروش پر ایک غیر ضروری اور بھاری بوجھ ھے جو کہ دروش کہ عوام کو منظور نہیں - ہم نمائندگاں دروش مجسٹریٹ صاحب کی مزکورہ تجویز کو مسترد کرتے ہیں جو لوگ یہ تجویز دےرہے ہیں وہ زاتی مفاد کی خاطر یہ تجویز دےرہے ہیں اس میں عوام دروش کا کوئی مفاد نہیں - 

(3) یکہ مجسٹریٹ صاحب موجود زیر استعمال آڈوں کو بھی بہتر کرانے میں مدد کرسکتا ہے پانی کی فراہمی باتھ روم اور انتظارگاہ ملکان سے تعمیر کروا سکتا ہے لیکن ادھر ادھر کراکر عوام پر بوجھ ڈالنے سے گریز کرنا بہتر ہے - مجسٹریٹ صاحب دروش بازار کے اندر ٹوٹے پھوٹے سڑکوں کی مرمت دروش شہری ائیریا میں پینے کیلئے صاف پانی کی فراہمی اور بازاروں میں تجاوزات کے خلاف اقدامات کرئے -

(4)یکہ بلفرض مجسٹریٹ صاحب اگر ٹی ایم اے کیلئے امدن کا زریعہ تلاش کرنا چاہتا ہے تو ان کو چاہئے کہ مناسب جگہوں میں پھاٹک لگائے اور ہر باہر جانے والی گاڑی سے مبلغ دس روپے وصول کرکے جمع کرائے لیکن عوام دروش کو ادھر ادھر جانے پر اور منتقل ہونے والی پر مجبورنہ کرائے - عوام دروش بلا معقول وجہ منتقل ہونے کیلئے تیار نہیں - فی الحالی ایسی کوئی نوبت ائی ہے

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget