اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

16 اگست، 2017

ہنسننا منع نہیں ہے۔ لطیفے پڑھیں اور سنائیں ؛ لطیفوں کا سیٹ نمبر 4

 

ایک استاد نے ملازمت سے استعفیٰ دے دیا۔ ہیڈ ماسڑ نے اس سے وجہ پوچھی تو اس نے کہا:
آج کل استاد، ہیڈ ماسٹر سے ڈرتے ہیں، ہیڈ ماسٹر سکولوں کے انسپکٹر سے ڈرتے ہیں۔ سکولوں کے انسپکٹر محکمہ تعلیم والوں سے ڈرتے ہیں اور محکمہ تعلیم والے بچوں کے والدین سے ڈرے ہیں اور والدین بچوں سے ڈرتے ہیں اور بچے کسی سے نہیں ڈرتے 

اس لیے استعفی دے رہا ہوں۔

_____________

دکان دار: اگر تم محنت اور ہوشیاری سےکام کرو گے تو ضرور ترقی کرو گے۔ مجھے دیکھو پہلے میں اس دکان کا ملازم تھا اب اس دکان کا مالک ہوں۔

ملازم سرد آہ بھرتے ہوئے، مگر جناب آپ کے سابقہ مالک جیسے بھولے بھالے لوگ آج کل کہاں ملتے ہیں؟

_______________________

عجائب گھر کے گائیڈ نے مہمان خواتین کو سیر کرانے کے بعد پوچھا۔
میں نے آپ کو عجائب گھر کی تمام چیزیں دکھا دی ہیں اگر آپ مزید کچھ پوچھنا چاہتی ہوں تو فرمائیے۔
ایک خاتون نے پوچھا۔
آپ عجائب گھر کے فرش کو چمکدار بنانے کے لیے کون سا پالش استعمال کرتے ہیں؟
______________

بیوی ناشتے کے ٹیبل پے خاوند سے۔
جی توانوں انڈا بنا دا۔
خاوند۔
تیری میربانی مینوں بندا ای رین دے۔ انڈا نا بنائیں۔ پیلے وی توں مینوں کئی وار مرغا بنا چکی ایں۔

____________________________


‏لڑکی نے اپنے منگیتر کو میسج کیا.کیا ہماری شادی نہیں ہوسکتی?
لڑکےکو بہت صدمہ ہوا کچھ ہی منٹ بعد دوسرا میسج آیا
سوری غلطی سےمیسج آپ کو چلا گیا
لڑکا بیہوش  😂😂😂




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں