7 اگست، 2017

ضلع دیامر اور چلاس میں بارشوں نے تباہی پھیلادی، 5 افراد سیلابی ریلے میں لاپتہ ہوگئے

 

ضلع دیامر کے مختلف علاقوں میں موسلادھار بارشوں نے تباہی پھیلا دی، ایک شخص جان بحق، دوسرا لاپتہ ہوگیا

چلاس :  ضلع دیامر کے مختلف علاقوں تھک ، گونرفارم ، تھور ، بٹوگاہ ، بونر داس سمیت سب ڈویژن داریل تانگیر میں تباہ کن بارشوں نے تباہی پھیلا دی ، ایک شخص جان بحق دوسرا لاپتہ ، ہزاروں کنال زرعی اراضی مکانات کو شدید نقصان پہنچا شاہراہ بابوسر ناران مختلف مقامات پر بند کئی گاڑیاں لینڈ سلائیڈنگ کی زد میں آگئیں ۔ گزشتہ رات گرج چمک کے ساتھ موسلادھار بارشوں نے ضلع دیامر کے مختلف علاقوں میں تباہی مچا دی ۔ گونر فارم میں سیلابی ریلے میں دو افراد بہہ گئے ایک کی لاش نکال لی گئی جبکہ دوسرا تاحال لاپتہ ہے ۔ اس کے علاوہ کئی ایکڑ اراضی کو شدید نقصان پہنچا ۔ تھک میں لینڈ سلائیڈنگ اور مٹی کے تودے گرنے سے کئی گاڑیاں ملبے تلے دب گئیں جبکہ کار میں سوار افراد معجزانہ طور پر محفوظ رہے ۔ سیلابی ریلے سے کئی مکانات کو شدید نقصان پہنچا اور ہزاروں کنال اراضی متاثر ہوئی ۔ شاہراہ بابوسر ناران کئی مقامات سے بلاک ہو گئی ہے ۔ جس کی بحالی کیلئے دو دن لگ سکتے ہیں ۔سیلاب کے باعث تھک فیز ٹو پاور ہاؤس بند ہو گیا جس سے چلاس شہر کو بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی ۔ علاوہ ازیں تھور اور داریل تانگیر میں موسلادھار بارش سے کئی مکانات کو نقصان پہنچا اور کھڑی فصلیں متاثر ہوئی ۔ شاہراہ بابوسر ناران کی بندش سے سینکڑوں سیاح محصور ہو گئے ہیں ۔ تھک کے مقامی لوگوں نے پھنسے ہوئے سیاحوں کو اپنے گھروں میں رات گزارنے کیلئے جگہ فراہم کی ۔ ضلعی انتظامیہ نے حالیہ بارشوں سے ہونے والے نقصانات کا تخمینہ لگانے اور شاہراہ بابوسر ناران کی بحالی کیلئے اقدامات کا آغاز کر دیا ہے۔
چلاس کے علاقے تھک میں سیلاب کی تباہ کاریاں دوسرے دن بھی جاری ، ایک بار پھر سیلاب کے نتیجے میں متعدد مکانات زرعی اراضی شدید متاثر ،واٹر چینل تباہ ،  لینڈ سلائیڈنگ اور مٹی کے تودے گرنے سے شاہراہ بابوسر ناران مزید بلاک ہو گئی ۔ گزشتہ روز ہونے والی تباہ کن بارشوں کے بعد چلاس کے علاقے  تھک چھراٹ  میں ایک بار پھر گرج چمک کے ساتھ تیز بارش کے بعد سیلاب آگیا ۔ لوگوں نے بھاگ کر جانیں بچائیں ۔ سیلاب کے نتیجے میں ایک درجن کے قریب مکان ، سینکڑوں ایکڑ اراضی کو شدید نقصان پہنچا جبکہ واٹر چینل مکمل طور پر تباہ ہو گئے ۔ جگہ جگہ لینڈ سلائیڈنگ کے باعث شاہراہ بابوسر ناران مزید ٹریفک کی آمد و رفت کیلئے بند ہو گئی ۔ این ایچ اے ، نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ ، ضلعی انتظامیہ اور محکمہ تعمیرات عامہ دیامر نے شاہراہ بابوسر ناران کی بحالی کیلئے بھاری مشینری کے ذریعے کام شروع کردیا ہے ، ضلعی انتظامیہ کے مطابق  چوبیس گھنٹوں تک شاہراہ کو ٹریفک کی آمدورفت کیلئے مکمل بحال کر دیا جائے گا ۔

کرٹیسی پامیر ٹائمز




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget