28 اگست، 2017

خیبرپختونخوا پولیس کی ششماہی رپورٹ جاری: چترال سب سے پرامن ضلع قرار دہشت گردی اور جرائم کوئی واقعہ پیش نہیں آیا

پشاور (نیوز ڈیسک ٹائمزآف چترال 28 اگست 2017)  خیبرپختونخوا میں پولیس نے ششماہی رپورٹ جاری کردی ہے ۔ یہ رپورٹ صوبے  تمام اضلاع میں امن اور جرائم سے متعلق ہوتی ہے۔  رپورٹ کے مطابق رواں سال کے گزشتہ 6 ماہ کے اندر دہشت گردی کے 88 واقعات رونماہوئے۔  رپورٹ کے مطباق صوبہ خیبرپختونخوا کا شہر پشاور دہشت گردی، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری میں سرفہرست رہا ہے ۔ جہاں  6 ماہ میں دہشت گردی کے 26 واقعات ہوئے۔ صوبے میں رواں سال اغوا کے 32 واقعات ہوئے، صوبے بھر میں بھتہ خوری کے 17 واقعات ہوئے جن میں سے 8 واقعات پشاور میں پیش آئے۔ 6 ماہ میں 20 افراد ٹارگٹ کلنگ کا نشانہ بنے اور پشاور میں ٹارگٹ کلنگ کے 5 واقعات پیش آئے جب کہ شہر میں اغوا کے 5 واقعات ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق 6 ماہ کے دوران صوبے بھر میں 20 ڈکیتیاں ہوئیں جب کہ 327 افراد کو مختلف وجوہات پر قتل کیا گیا۔ رپورٹ میں چترال کو خیبرپختونخوا کا سب سے پر امن ضلع قرار دیا گیا ہے جس میں رواں سال کے پہلے 6 ماہ میں دہشت گردی اور جرائم کا کوئی واقعہ رونما نہیں ہوا۔




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget