2 ستمبر، 2017

ڈان ریلیف کی ٹیم کو چرون اویر میں کام سے روک دیا گیا، چترال سکاؤوٹ کی جانب سے این او سی پیش کرنے کا مطالبہ

 

پشاور (ٹائمز آف چترال نیوز) چترال سکاؤٹ نےڈان ریلیف ارتھ کویک ویلفیر آرگنائزیشن جو کہ ڈان ریلیف کے نام سے جانا جاتا ہے کو زلزلے سے تباہ حال چترال کے دور افتادہ گاؤں چرون اویر میں کام سے روک دیا گیا ہے۔ پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ ڈان ریلیف ، نان ابجیکشن سرٹیفیکیٹ (این او سی ) پیش کرنے میں ناکام ہوگیا ہے۔

ڈان اخبار میں شائع ہونے والی خبر کے مطابق ، چترال سکاؤٹ کے کچھ اہلکاروں نے ۲۴ اگست ۲۰۱۷ کو ڈان ریلیف ٹیم کو کوراغ پوسٹ پر روکا۔اور ٹیم کے سربراہ سے چرون اویر میں تعمیر نو اور بحالی کے کاموں کے حوالے سے این او سی مانگا، کہ اتھارٹی کے تحت کام کر رہے ہیں۔

ٹیم این او سی دکھانے میں ناکام رہی، اس کے بعد انہیں چترال بھیج دیا گیا۔ بعد ازاں ٹیم چیف زاہد خٹک مدد کے لئے چترال کے ڈپٹی کمشنر شہاب حامد یوسفزئی سے رابطہ کیا۔ لیکن این او سی کی غیر موجودگی میں کسی قسم کی مدد سے معذرت کرلی۔

ڈان کی پریس ریلیز کے مطابق ڈان ریلیف زلزلہ زدہ علاقوں میں تباہ گھروں کے مکینوں کے لئے نئے گھروں کی تعمیر کے لئے اپنے وسائل استعمال کر رہی ہے ۔ ڈان منجمنٹ کے مطابق ڈان ریلیف زلزلہ زدہ علاقوں میں ارتھ کویک ری کنسٹرکشن اینڈ ری ہیبلٹیشن اتھارٹی کی سفارشات کے تحت کام کرتی ہے اس لئے ڈان انتظامیہ اور ملازمین سمجھتے ہیں کہ کسی حکومتی ادارے کی جانب سے این او سی کا مطالبہ نا قابل فہم ہے۔ ڈان ریلیف کا قیام 2005 ڈان میڈیا گروپ کے تحت عمل میں آیا تھا۔ اور یہ سال 2015 سے چرون میں زلزلہ متاثرین کے لئے زلزلہ پروف گھر تعمیر کر رہی ہیں۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget