اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

21 ستمبر، 2017

گرفتاری کے خوف سے اسحاق ڈار کا پاکستان آنے سے انکار، بیرون ملک موجوددیا

 

اسلام آباد (ویب ڈیسک 21 ستمبر 17) وزیر خزانہ اسحاق ڈار گرفتاری کے خوف سے پاکستان آنے سے انکار کردیا ہے۔  وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے اعلیٰ عدلیہ سے اپنی ضمانت قبل از گرفتاری کی منظوری تک اپنی وطن نہ آنے کا فیصلہ کیا ہے۔ 

پاکستان کے سب بڑے اخبار ’’جنگ‘‘ کی رپورٹ کے مطابق آئندہ دو روز میں ان کے وکیل ضمانت قبل از گرفتاری کے لئے اسلام آباد ہائی کورٹ میں درخواست دائر کریں گے۔ توقع ہے اسی روز ان کی ضمانت ہوجائے گی اور اس طرح وہ 25 ستمبر کو احتساب عدالت میں پیش ہو سکیں گے۔ معتبر ذرائع کے مطابق اسحاق ڈار کا بدھ 20 ستمبر تک وطن واپسی کا پروگرام تھا لیکن اپنے وکلاء سے مشورے کے بعد انہوں نے برطانیہ میں اپنا قیام طویل کردیا۔ ساتھ ہی آئندہ سماعت سے قبل احتساب عدالت میں ضمانتی بانڈ جمع کرادیئے جائیں گےاور جیسے ہی عدالت ضمانت منظور کرتی ہے وہ پاکستان واپس آجائیں گے۔ درخواست ضمانت قبل از گرفتاری مسترد ہونے کی صورت اسحاق ڈار وطن واپس نہیں آئیں گے اور ساتھ ہی وزارت خزانہ سے استعفیٰ بھی دے دیں گے۔واضح رہے کہ وفاقی کابینہ میں ان کے ساتھیوں نے اس منصب کے لئے دوڑ دھوپ شروع کردی ہے۔قومی احتساب بیورو(نیب) انہیں پہلے ہی نوٹس روانہ کرچکا ہے کہ وہ نیب آرڈیننس کی دفعہ۔23کے تحت اپنی جائیداد کسی دوسرے کو منتقل نہ کریں۔ اس حوالے سے متعلقہ حکام کو خطوط لکھ دیئے گئے ۔ نیب میں ذرائع نے بتایا کہ ملزم کی جانب سے جائیداد کی منتقلی آئندہ20سال بعد بھی منسوخ تصوّر کیا جائے گا۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں