27 اکتوبر، 2017

جیو اور جنگ سے وابستہ صحافی احمد نورانی پر حملہ، شدید زخمی ہوگئے

 

اسلام آباد (ٹائمز آف چترال ویب ڈیسک) جیو اور جنگ گروپ سے وابستہ تحقیقاتی صحافی احمد نورانی پر حملہ کردیا گیا ہے جس سے احمد شدید زخمی ہوئے ہیں۔  راولپنڈی سے اسلام آباد آتے ہوئے نا معلوم موٹر سواروں نے ان کی گاڑی کا تعاقب کیا اور زیرو پوائنٹ جنکشن پر روکا۔ کہا جاتا ہے کہ وہاں پہلے سے دیگر افراد موجود تھے۔ نوارانی کو گاڑی سے اتار کر تشدد کا نشانہ بنایا اور موقع سے فرار ہوگئے۔


یاد رہے پاناما کیس میں نوارانی بڑھ چڑھ کر خبریں دیتے تھے۔  ملزمان تششد کرنے کے بعد فرار ہوگئے جبکہ وقوعہ پر موجود ایک شہری نے ان کی گاڑی چلاکر انہیں ہسپتال پہنچایا۔ جہاں انہیں طبی امداد دی گئی۔ اسپتال ذرائع کے مطابق صحافی احمد نورانی کو ہوش آچکا ہے اور ان کی حالت خطرے سے باہر ہے تاہم سر میں شدید چوٹیں آنے کی وجہ سے انہیں آرام کا مشورہ دیا گیا ہے۔

احمدنورانی پر حملے کی سیاسی قائدین نے شدید الفاظ میں مذمت کی ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیرمین عمران خان نے بھی اپنی ٹوئٹ میں سینئر صحافی احمد نورانی پر حملے کی شدید مذمت کی۔ تحریک انصاف کے وائس چیرمین شاہ محمود قریشی نے بھی احمد نورانی پر حملے کی شدید مذمت کی۔

پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری نے بھی واقعے کی مذمت کی ہے۔ 
امیر جماعت اسلامی سراج الحق، عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید، مریم نواز نے بھی حملے کی مذمت کی ہیں۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget