نومبر 29, 2017

افغانستان میں عدم استحکام کا سبب پاکستان ہے: سابق افغان صدر حامد کرزئی کی ہرزہ سرائی


کابل (ٹائمز آف چترال ویب ڈیسک) افغانستان میں عدم استحکام کی بنیادی وجہ پاکستان ہے۔ یہ بات ایک انٹرویوں کے دوران سابق افغان صدر حامد کرزئی نے کہی ہے۔  صدر حامد کرزئی نے پاکستان پر الزام عائد کیا ہے کہ افغانستان میں عدم استحکام کی بنیادی وجہ پاکستان ہے۔  انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں اور تربیتی مراکز پاکستان میں موجود ہیں اور دہشت گردی کیلئے مالی وسائل بھی وہیں سے مل رہے ہیں۔ 

کرزئی نے کہا ہے کہ افغان عوام نے اپنے ملک کو پرامن، خوشحال اور جمہوری بنانے کیلئے عالمی برادری کے ساتھ مکمل تعاون کیا۔ انہوں نے افغانستان میں دہشت گردی سے نمٹنے کے حوالے سے امریکہ کی حکمت عملی پر بھی کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں شہریوں کی ہلاکتیں ،جیلوں کا قیام ، ہماری خودمختاری اور افغانوں کے گھروں کی چادر اور چاردیواری کے تقدس کی پامالی جیسے واقعات میں ہمیں اس نقطہ نظر پر پہنچایا ہے کہ ہم آج کہاں کھڑے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یہ جائزہ لینے کیلئے کہ افغانستان میں کیا کچھ غلط ہوا لویہ جرگہ بہترین فورم ہے۔ جب میں صدر تھا تو تمام ایشوز لویہ جرگہ میں ڈسکس ہوتے تھے، لویہ جرگہ تمام ایشوز پر فیصلے ہوتے تھے جن میں پاکستان سے تعلقات بھی شامل ہوتا تھا، ملک امن و استحکام، آئین افغانستان، امریکہ کے ساتھ سیکیوریٹی کے معاملات، طالبان سے مذاکرات وغیرہ تمام ایشوز پر لویہ جرگہ میں بات ہوتی تھی۔ ملک کی سیکیوریٹی بہتر ہونے کے بجائے بد تر ہوتا گیا۔ دہشت گردی کے خدشات بڑھ گئے ہیں ہم داعش سے برسر پیکار ہیں، داعش ہمارے ملک کے لئے سب سے بڑا خطرہ ہے۔

 انہوں نے ملک چھوڑ کر یورپ جانے والے افغان باشندوں پر بھی تنقید کی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget