نومبر 29, 2017

یہ ہوتی ہے شرم : کرپشن کیخلاف تحقیقات : زیر تفتیشن چینی فوج کے جنرل نے خودکشی کر لی

 


بیجنگ (ٹائمز آف چترال : نیوز 29 نومبر 2017) رشوت کے الزام میں زیر تفتیش چینی فوج کے اہم ترین جنرل نے نومبر 23 کو خود کشی کرلی۔ ان دنوں چینی صدر زی جنگ پنگ کی ہدایت پر کرپشن کے خلاف مہم چل رہی ہے۔ چینی جنرل زینگ یانگ اپنے گھر میں مردہ پایا گیا۔ چینی خبر رساں ایجنسی زینہو نیوز نے چین کی سنٹرل ملٹری کمیشن کے حوالے سے بتایا کہ 23 نومبر 17 کو جنرل زینگ یانگ اپنے گھر میں مردہ پایا گیا ہے۔

چینی فوج کے آفیشل نیوز پیپر پیپلز لبریشن آرمی ڈیلی نے لکھا ہے کہ زینگ یانگ کا قانونی سزا سے بچنے کے لئے ایسا ردعمل بدمعاشی اور سراسر شرمناک ہے۔ انہیں ملک کے قانون کے مطابق تفتیش کا سامنا کرنا چاہئے تھا۔

جنرل زینگ کی عمر 66 برس تھی، زینگ سنٹرل ملٹی کمیشن میں ان 11 جرنلوں میں سے ایک تھے جنہوں نے چین کی فوج کو کمانڈ کیا۔ 

منگل کو چینی سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق چین کی سنٹرل ملٹری کمشن کے رکن اور ملٹری پولیٹیکل ورک ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر زانگ یانگ جن پر رشوت خوری اور بدعنوانی سے جائیدادیں بنانے کے الزامات تھے اور ان کے خلاف تفتیش جاری تھی کہ انہوں نے خودکشی کر لی۔ تحقیقات کے دوران ان کے بدعنوانی کے الزامات میں برطرف کئے جانے والے 2 سابق فوجی جرنیلوں گائو بوزیانگ اور شو کائہائو سے روابط بھی سامنے آئے تھے۔ادارے کے مطابق زہنگ ینگ نے اپنی رہائش گاہ پر خودکو پھندہ لگا کر خودکشی کی۔ان کی خودکشی پر چینی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ زہانگ اپنی اخلاقی گراوٹ کی آخری سطح پر آ چکا تھا جس کی وجہ سے اس نے خودکشی کر لی تاکہ سزا سے بچ سکے۔ زانگ کا اقدام انتہائی مکروہ ہے انہوں نے ایک انتہائی اعلیٰ پوزیشن اورطاقت کا شرمناک استعمال کیا ۔یاد رہے کہ کمونسٹ پارٹی کے ملٹری ونگ نے ان کے خلاف 28 اگست کو تحقیقات کی منظوری دی تھی۔


Photo courtesy: Reuters




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں

Recent Posts Widget