اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

31 دسمبر، 2017

کوئی این آر او نہیں، شہباز شریف کو لے جانیوالا طیارہ سعودی انٹلیجنس ایجنسی کا تھا، گرفتار شہزادے اپنے ساتھ ’’شریفوں‘‘ کو بھی لے ڈوبے، مسلم لیگ (ن) کے رہنما ظفر علی شاہ کے چونکا دینے والے انکشافات

اسلام آباد (ویب ڈیسک) مسلم لیگ (ن) کے رہنما ظفر علی شاہ نے چونکا دینے والے انکشافات کئے ہیں انہوں نے کہا ہے کہ کوئی این آر او نہیں بن  رہا ہے بلکہ شریف خاندان دلدل میں پھنستا جا رہا ہے، تفصیلات کے ایک مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام کی میزبان نے کہا کہ سعودی عرب سے طیارہ آیا اور شہباز شریف کو لے کر سعودی عرب چلا گیا یہ باتیں تو ہو ہی رہی ہیں مگر اخبارات کی ہیڈ لائنز کے مطابق شہباز شریف کے دورہ سعودی عرب سے متعلق جب مشاہد اللہ اور رانا ثنا اللہ سےپوچھا گیا تو وہ کافی پر امید اور خوش تھے۔ اور انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے لیے اچھی خبر آ رہی ہے تو ہم نے سوچا کہ آپ سے پوچھا جائے کہ کیا اچھی خبر آ رہی ہے؟ 


جس کے جواب میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما ظفر علی شاہ کا کہنا تھا  کہ اگر خبر کی بات ہے تو میں اس معاملے میں بڑا کلئیر ہوں کہ این آر او والی بات سرے سے ہی نہیں ہے، بلکہ اُلٹا شریف خاندان کے لوگ دلدل میں پھنستے جا رہے ہیں۔ آپ کو علم ہے بلکہ پوری دنیا کو علم ہے کہ سعودی عرب میں پچھلے دنوں تبدیلیاں ہوئیں اور وہاں سے کرپشن کے سلسلے میں شہزادوں کی ایک بہت بڑی کھیپ پکڑی گئی۔ شہزادوں سے کرپشن کی تفتیش کے دوران کچھ باتیں سامنے آئی ہیں۔ وہاں کے شہزادوں نے اپنے دفاع میں کہا ہے کہ ہمارا کاروباری شراکت پاکستان کے ایک سرمایہ دار خاندان کے ساتھ ہے، ظفر علی شاہ نے کہا کہ اسی تفتیش کے سلسلے میں سعودی عرب کی ایجنسیاں طیارہ لے کر آئیں اور اپنے ساتھ شہباز شریف کو لے گئیں کیونکہ شہباز شریف سے اس بات کی چھان بین ہونی ہے، جہاں تک این آر او کی بات ہے تو میری اطلاع کے مطابق این آر او نہیں بن رہا ہے۔ میرا نقطہ نظر یہ ہے کہ کوئی این آر او نہیں بن رہا لیکن میری رائے غلط بھی ہو سکتی ہے۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما ظفر علی شاہ نے کہا کہ اگر خبر کی بات ہے تو میں اس معاملے میں بڑا کلئیر ہوں کہ این آر او والی بات سرے سے ہی نہیں ہے، بلکہ اُلٹا شریف خاندان کے لوگ دلدل میں پھنستے جا رہے ہیں۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں