اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

17 دسمبر، 2017

میرموازنہ نوازشریف سے کرنا ایسا ہے جیسے سلطانہ ڈاکو سے: اللہ کا شکر ہے پاکستانی عوام کی خدمت کا موقع ملا ہے: عمران خان



اسلام آباد (ٹی او سی: مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے عمران خان اہل قرار دے دیا جبکہ ان کی پارٹی کے اہم ترین رکن جہانگیر ترین کو نا اہل قرار دیا ہے۔ 

چیرمین تحریک انصاف عمران خان نے سپریم کورٹ کے فیصلے پرخوشی کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ سپریم کورٹ فیصلے پرخوشی ہے کہ مجھے پاکستانی عوام کی خدمت کاموقع ملاہے، نوازشریف کوکیس کرنے کیلئے منشیات فروش کے علاوہ کوئی نہیں ملا، مجھے جہانگیرترین کا بڑاافسوس ہے، نظرثانی اپیل دائر کریں گے، نیب نے حدیبیہ پیپرزکیس میں شہبازشریف کوبچایاہے، ہیلی کاپٹریا جہازپارٹی دیتی ہے کسی کااحسان مند نہیں ہوں۔

عمران خان نے سپریم کورٹ میں نا اہلی فیصلے پراپنے ردعمل میں کہا ہےکہ خوشی ہے کہ مجھے پاکستانی عوام کی خدمت کاموقع ملاہے۔ ایک سال کیس چلا۔کیس کس نے دائر کیا جو خود منی لانڈراور منشیات فروش ہے۔ کیس ایسے آدمی کیخلا ف کیا جس نے کرکٹ کھیلی اور پیسہ بھی سارا پاکستان لے کرآیا۔ منی ٹریل بھی مل گئی سارے ریکارڈر بھی پیش کیے۔60 دستاویزات سپریم کورٹ میں جمع کروائی۔

نوازشریف نے ابھی 300 ارب کا جواب دیناہے جو وہ بیرون ملک منی لانڈرنگ کے ذریعے لے کرگیا۔ اس کا صرف ایک ثبوت آیا وہ بھی قطری خط آیا۔انہوں نے کہاکہ مجھے یقین ہے کہ جب معاشرے میں اخلاقیات ختم ہوجات ہیں۔تب ایک منی لانڈرنگ کرنے اور دوسری طرف کرکٹ کی کمائی پاکستان لانے والے کاایک سال موازنہ کیاگیا۔یہ اچھا ہواکہ ایک سال کی تلاشی ہوئی اور میں بری ہوگیا۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں