دسمبر 22, 2017

بیت القدس: ڈونلڈ ٹرمپ کی اقوام متحدہ کے تمام رکن ممالک کو دھمکی؛ لیکن ٹرمپ کو ہی منہ کی کھانی پڑی: تفصیل پڑھیں

واشنگٹن (ویب ڈیسک) اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں یروشلم کے حوالے سے امریکی فیصلے کے خلاف قرارداد پیش کی جانے والی تھی۔ قرارداد کے مسودے میں امریکا کا نام لئے بغیر کہا گیا تھا کہ یروشلم کے بارے میں ہر فیصلے کو ختم کیا جائے۔ 


وہاں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے اقوام متحدہ کے رکن ممالک کو دھمکی دی کہ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے امریکی فیصلے کے خلاف اقوام متحدہ میں پیش کی جانے والی قرارداد کی حمایت کرنے والے ممالک کی مالی امداد روک لی جائے گی۔ وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ وہ ہم سے ہزاروں لاکھوں ڈالر بلکہ اربوں ڈالر لیتے ہیں اور اس کے بعد بھی ہمارے خلاف ووٹ دیتے ہیں۔ ہم نے ان کے ووٹوں پر نظر رکھی ہوئی ہے۔ ٹرمپ نے کہا تھا کہ  انھیں ہمارے خلاف ووٹ دینے دو، ہمیں اس کی کوئی پروا نہیں۔ بلکہ ہمیں کروڑوں ڈالر کی بچت ہوگی۔

صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے یہ بیان مسلمان ممالک کی درخوست پر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی اجلاس بلائے جانے پر سامنے آیا تھا، ہنگامی اجلاس میں 193 ممالک نے شرکت کرنی تھی اور امریکی فیصلے کے خلاف ووٹ دینا تھا۔

دوسری جانب اقوام متحدہ میں امریکہ کی سفیر نکی ہیلی نے رکن ممالک کو خبردار کرتے ہوئے کہا تھا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ان سے کہا ہے کہ وہ انھیں ہمارے خلاف ووٹ دینے والوں کے بارے میں رپورٹ کریں۔

لیکن امریکہ اور ڈونلڈ ٹرمپ کو منہ کی کھانی پڑی
ٹرمپ کی دھمکی کے باوجود قبلہ اول کے معاملے پر پاکستان نے بھی فلسطین کے حق میں ووٹ ڈال دیا۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں امریکا کی حمایت میں صرف 9 ووٹ پڑے جب کہ 128ممالک نے فلسطین کے حق میں ووٹ دیا۔

ووٹنگ سے پہلے ٹرمپ نے دھمکی دی تھی کہ دنیا کے کئی ممالک کو ہم سالانہ اربوں ڈالر دیتے ہیں، اگر ہمارے خلاف ووٹ دیا تو ہم ان کی امداد میں کٹوتی کریں گے۔ ٹرمپ کی دھمکی کے باوجود ووٹنگ اور بھاری اکثریت سے قرار داد منظور ہونے پر امریکا کو منہ کی کھانی پڑی ہے۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں