10 جنوری، 2018

کوئٹہ میں صوبائی اسمبلی کے قریب خود کش دھماکا، 5 اہلکاروں سمیت 7 افراد شہید 17 اور زخمی



کوئٹہ (ٹائمزآف چترال مانیٹرنگ ڈیسک) دشمن نے ایک پھر پاکستان کو نشانہ بنایا ہے۔ کوئٹہ میں صوبائی اسمبلی کے قریب واقع زرغون روڈ پر حملے کے نتیجے میں 5 اہلکاروں سمیت 7 افراد شہید ہوگئے ہیں جبکہ 17 سے زائد زخمی ہیں۔ خودکش حملہ  بلوچستان کانسٹیبلری کی ٹرک کیا گیا تھا۔ ابتدائی تحقیقات کے مطابق خود کش حملہ آور پیدل تھا اور صوبائی اسمبلی کی طرف جانا چاہتا تھا ، راستہ نہ ملنے پر خود کو کانسٹیبلری کی ٹرک کے قریب دھماکے سے اڑالیا۔  خود کش حملہ شام 6 بج کر 18منٹ  پر ہوا ۔ آج ہی وزیر اعلیٰ بلوچستان نے استعفیٰ دیا تھا اور بلوچستان سیاسی عدم استحکام کا شکار تھا۔ 

آئی جی بلوچستان معظم جاہ انصاری نے کہا ہے کہ پاک افغان سرحد پورس سے دہشت گرد داخل ہوکر اہداف کو نشانہ بناتے ہیں ، آج کا حملہ آور بھی سرحد پار سے آیا ہوگا۔ حکام کے مطابق حملہ آور کا ہدف بلوچستان اسمبلی تھا، لیکن حملہ آور کو راستہ نہ ملنے پر اس نے بلوچستان کانسٹیبلری کے ٹرک کو نشانہ بنایا ہے، ساتھ میں چلنے والی مسافر بس بھی دہشت گردی کے واقعے کی لپیٹ میں آئی، اور اسے نقصان پہنچا۔ دھماکہ کی شدت دور دور تک محسوس کی گئی۔ دھماکے میں شہید ہونے والوں کی لاشیں اور زخمیوں کو سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کیا گیا، 6 زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ 

ابتدائی تحقیقات کے مطابق خود کش حملہ آور کی عمر 15سے 20 سال کے درمیان تھی، جس نے دہشت گردی کی اس واردات میں 8 سے 10 کلو بارودی مواد استعمال کیا۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں