17 جنوری، 2018

گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے طالب علم کو لاہورمیں بہیمانہ تشدد کرکے قتل کردیا گیا

 


لاہور / گلگت (ٹائمز آف چترال نیوز) گلگت بلتستان سے تعلق رکھنے والے طالب علم دلاورعباس ولد اخوند عباس کو  لاہور میں 20 سے زائد افراد نے بہیمانہ تشدد کے بعد قتل کردیا۔ لاہور کے ماڈل ٹاؤن میں ایک کرکٹ گراؤنڈ پر معمولی بات پر 20 سے زائد متعصب پنجابی لڑکوں نے تشدد کا نشانہ بنایا، دلاور کو کرکٹ کے بیٹوں اور ہاکی اسٹکس سے اتنا مارا کہ دلاور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہسپتال میں دم توڑ دیا۔

سہانے مستقبل کا خواب لئے دلاور یونیورسٹی میں داخلے کے لئے لاہور گیا تھا اور داخلہ حاصل کرنے کے لئے کوشاں تھا۔ دلاور کے قتل کی خبر پہنچتے ہی گھر اور گاؤں میں سوگ کا عالم ہے۔ دلاور اپنے والدین کا اکلوتا فرزند تھا۔ پنجاپ پولیس اپنی روایتی سرد مہری اور جاہلیت پر قائم ہے۔ ابھی تک دلاور عباس کے قتل کا ایف آئی آر ملزمان کے خلاف درج نہیں کیا ہے اور نہی کوئی گرفتاری عمل میں لائی ہے۔ ذرائع کے مطابق پولیس پر مقامی ایم این اے کا دباؤ ہے۔ 

دلاور عباس کا تعلق گلگت بلتستان کے ضلع گانگچھے کا چھوٹے سے گاؤں کونیس آباد سے ہے۔ کونیس آباد گانچھے کے صدر مقام خپلو کی طرف جاتے یگو گاؤں سے پہلے آنے والے پل عبور کرکے آتا ہے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں