10 جنوری، 2018

قصور میں بے قصور ننھی بچی درندوں کے ہتھے چڑھ گئی، زیادتی کے بعد قتل کردیا گیا


قصور (نیوز ڈیسک) پنجاب کا شہر قصور بچوں اور بچیوں کے تحظ کے حوالے سے پہلے سے ہی بدنام ہے۔ لیکن گزشتہ روز کے واقعے نے پرانے تمام دل خراش واقعات کی یاد تازہ کردی۔ پنجاب کے شہر قصور میں 8 سالہ کمسن بچی زینب کو اغوا کے بعد جنسی درندگی کا نشانہ بنایا گیا اور بعد ازاں اسے قتل کردیا گیا۔  زینب 5 جنوری کو اغواء ہوئی اور4 دن بعد اس کی لاش لال شہباز روڈ سے برآمد ہوئی۔ 

پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر پوسٹمارٹم کے لیے بھجوادیا تھا۔ پوسٹمارٹم رپورٹ میں زینب کے ساتھ جنسی  زیادتی کی تصدیق ہو گئی ہے ۔ رپورٹ کے مطابق بچی سے زیادتی کے بعد اسے گلا گھونٹ کر قتل کیا گیا ہے۔  پوسٹمارٹم کے بعد زینب کی میت کو لواحقین کے حوالے کر دیا گیا ہے ۔ زینب کے والدین عمرہ کی غرض سے ملک سے باہر تھے، جو اپنی بچی کی ہلاکت کا سُن کر آج وطن واپس آرہے ہیں۔  قصور میں مذکورہ واقعہ کے خلاف شہری سراپا احتجاج ہیں۔ شہریوں نے قصور میں چاندنی چوک پر اتفاق بازار سے شہباز روڈ تک دھرنا دے رکھا ہے۔ مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ زینب کے قاتلوں کو فوری طور پر گرفتار کر کے عبرتناک سزا دی جائے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں