25 جنوری، 2018

انتظامیہ سے کامیاب مزاکرات کے بعد آغاخان ہیلتھ سروس چترال کے احتجاجی ملازمین نے دھرنا ختم کردیا

 

چترال (ٹائمزآف چترال نیوز ڈیسک) آغاخان ہیلتھ سروس پاکستان، چترال کے ملازمین 4 روز سے احتجاجی دھرنے دیئے ہوئے تھے۔ خبرین گردش کررہی تھیں کہ ادارہ عملہ کم کررہا ہے اور کچھ ہیلتھ مراکز بند کرنے والا ہے۔ جس کے خلاف ملازمین احتجاج کررہے تھے۔ بدھ کو کامیاب مزاکرات اور یقینی دہانی کرائے جانے پر ملازمین نے احتجاج ختم کرکے ڈیوٹیوں پر واپس چلے گئے۔ 

مسئلے کے حل کے لئے پریذیڈنٹ یجنل کونسل لوئرچترال محمدافضل، جی ایم آغاخان ایجوکیشن سروس ضلع چترال (ر) بریگیڈ ئیرخوش محمدخان ، ڈائریکٹرآغاخان ہیلتھ سروس چترال یوسف شہزاد، سیکرٹری ریجنل کونسل لوئرچترال ریاض حسین، ڈاکٹرسعدملوک ، جنرل منیجرآغاخان ہیلتھ سروس ڈاکٹر ظفر احمد نے دیگر سینئر اسٹاف کے ہمراہ احتجاجی ملازمین سے مزاکرات کئے، جس کے بعد ان کے جائز مطالبات سننے کے بعد حکم نے اعلیٰ انتظامیہ سے کانفرنس کال کے بعد ملازمین کو تحریری معاہدہ نامہ جاری کرتے ہوئے تمام عملے کو ڈیوٹیز پر واپس جانے پر راضی کرلیا۔

مزکراتی ٹیم نے بتایا کہ جن ملازمین کو فارغ کیا جائے گا انہیں ادارے کی پالیسی اور قانون کے مطابق مناسب ادائیگیاں کردی جائیں گی۔

جنرل منیجرڈاکٹرظفراحمد نے وضاحت کرتے ہوئے بتایا کہ آغا خان ڈیویلپمنٹ نیٹ ورک کی جانب سے صحت کے شعبہ سے تعلق رکھنے والی سرگرمیوں میں براہ راست اعانت سے ضلع چترال میں سالانہ تقربیا 4 لاکھ سے زیادہ افراد مستفید ہوتے ہیں۔ اس لئے صحت کی بہتر دیکھ بھال اور بڑھتی ہوئی ضروریات اور ٹیکنالوجی کی وجہ سے آغاخان ہیلتھ سروس پاکستان کو ایک بہتر ڈیلیوری ماڈیول کی ضرورت ہے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں