30 مارچ، 2018

افغان پناہ گزینوں میں غربت کے خاتمے کے لئے پی پی اے ایف اور یو این ایچ سی آر کے درمیان معاہدہ

 

اسلام آباد:  پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) اور اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) کے درمیان معاہدہ ہوگیا ہے، جس کے تحت خیبرپختونخوا اور بلوچستان کے اضلاع پشین اور صوابی میں رہائش پذیر انتہائی غریب افغانی پناہ گزینوں کی غربت میں خاتمے کے لئے مشترکہ طور پر کام کیا جائے گا۔ اس اقدام کا مقصد یہ ہے کہ افغان پناہ گزینوں اور ان کے خاندانوں کو غربت کی سطح سے نکالنے کے ساتھ انہیں پائیدار آمدن کے مواقع بھی فراہم کئے جائیں۔ 



افغان پناہ گزینوں کے خاندانوں کی غربت کے خاتمے کے اس آزمائشی پروگرام سے افغانی باشندوں اور انکے میزبانوں کی مہارتوں، مواقع، اثاثوں اور کارکردگی میں اضافہ ہوگا جن کی بدولت انہیں درپیش خطرات میں کمی آئے گی، آمدن میں اضافہ ہوگا اور ان کا کاروبار مستحکم ہوگا۔ 

پاکستان میں یو این ایچ سی آر کی نمائندہ رووینڈرینی مینیکڈیویلا (Ruvendrini Menikdiwela) اور پی پی اے ایف کے سی ای او قاضی عظمت عیسیٰ نے ایک تقریب میں اس معاہدے پر دستخط کئے۔ اس موقع پر دونوں اداروں کے اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔ اس شراکت داری سے 2 ہزار گھرانے مستفید ہوں گے، ان میں سے 70 فیصد وہ گھرانے ہیں جو باقاعدہ کیمپوں میں رہائش پذیر ہیں جبکہ 30 فیصد وہ گھرانے ہیں پروجیکٹ والے مقامات پر میزبان خاندانوں کے ساتھ مقیم ہیں۔ 

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے یو این ایچ سی آر پاکستان کی نمائندہ رووینڈرینی مینیکڈیویلا نے کہا، "تخفیف غربت کا ماڈل پاورٹی گریجویشن       (Poverty Graduation) ایک جامع حکمت عملی ہے جو پاکستان میں رہائش پذیر پناہ گزینوں کے لئے پائیدار اور دیرپا سہولیات کی فراہمی کے بھرپور مواقع رکھتی ہے۔ " 

پی پی اے ایف کے سی ای او قاضی عظمت عیسیٰ نے امید ظاہر کی کہ اس آزمائشی اقدام کیبدولت پناہ گزینوں اور انکے میزبان خاندانوں کو غربت سے باہر نکالنے میں مدد ملے گی۔ "پی پی اے ایف کی اس حکمت عملی میں سماجی آگہی، آمدن میں اضافہ اور مالیاتی سہولت کا امتزاج ہے جن کی بدولت انسانی مہارت اور اثاثے کے سرمائے سے طویل مدت تک فوری ضروریات کی تکمیل میں تعاون حاصل رہے گا اور متاثرہ گھرانے انتہائی غربت کی سطح سے نکل کر پائیدار آمدن حاصل کرنے لگیں گے۔" 

پاورٹی گریجویشن پروگرام ایک ایسا طریقہ ہے جس میں یومیہ 1.25 یومیہ ڈالر سے کم آمدن رکھنے والے اور بنیادی سہولیات سے محروم انتہائی غریب گھرانوں کے ساتھ تعاون کیا جاتا ہے۔ اس حکمت عملی میں جدت انگیز اور مارکیٹ کے موجودہ طریقوں کو یکجا کرکے لوگوں کی مدد کی جاتی ہے تاکہ پائیدار آمدن کے مواقع کے ساتھ وہ لوگ خود اپنے پاو ¿ں پر کھڑے ہوسکیں۔ 

یو این ایچ سی آر کی پاکستان میں ترجیح یہ ہے کہ دنیا میں سب سے زیادہ اور سب سے طویل عرصے سے موجود پناہ گزینوں کے لئے پائیدار سہولیات حاصل کی جائیں۔ پاکستان میں ایک تخمینے کے مطابق 1.4 ملین پناہ گزین موجود ہیں۔ ان میں اکثریت کا تعلق افغانستان سے ہے اور یہ پناہ گزین دیہات اور شہری علاقوں میں رہتے ہیں۔ مارچ 2002 سے یو این ایچ سی آر پاکستان سے رجسٹرڈ 4.2 ملین افغانی باشندوں کو واپس بھیجنے میں سہولت فراہم کرچکا ہے۔ 

پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف) ملک میں کمیونٹی کی بنیاد پر ترقی لانے والا سب سے بڑا ادارہ ہے۔ پی پی اے ایف ملک بھر میں سب سے زیادہ غریب اور پسماندہ دیہی طبقات کو وسیع اقسام کی مالیاتی اور غیرمالیاتی خدمات نجی شعبے کے طور پر فراہم کرتا ہے۔ پی پی اے ایف اپنی شراکتی تنظیموں اور کمیونٹی اداروں کی صلاحیتوں میں بہتری لانے کے لئے سرمایہ کاری سے غربت کے شکار گھرانوں کی نشاندہی کرتی ہے اور پائیدار آمدن کے کے لئے مواقع فراہم کرتی ہے۔ پی پی اے ایف کا مقصد یہ ہے کہ غریبوں کے نمائندہ، شفاف اور جوابدہ ادارے قائم کئے جائیں۔ اس پروگرام کے ڈیزائن میں خواتین کا کردار نتائج اور اثرات کے اعتبار سے انتہائی اہم ہے۔ یہ مالی تعاون کے ذریعے خواتین کی آمدن میں اضافے، اثاثوں کی منتقلی اور بلاسود قرضوں کی شکل میں قابل ذکر رسائی اور مواقع فراہم کرتا ہے۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں