14 مئی، 2018

داعش سے متاثر میاں بیوی نے 2 بچوں کو خود کش حملوں کے لئے استعمال کیا، 3 گرجا گھروں پر حملوں میں 10 افراد جان بحق درجنو زخمی

 

جکارتا (ویب ڈیسک) انڈونیشیا میں عیسائی گرجا گھروں پر دہشت گردوں نے حملہ کردیا۔ تفصیلات کے مطابق انڈونیشیا کے شہر سورابایا کے 3 گرجا گھروں میں خودکش حملوں کے نتیجے میں 10 افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوگئے۔ 

انڈونیشیا کے دوسرے سب سے بڑے شہر سورابایا میں داعش سے متاثر خودکش حملہ آوروں نے مختلف مقامات پر چند منٹوں کے وقفے سے تین گرجا گھروں کو نشانہ بنایا جس کے باعث ابتدائی اطلاعات کے مطابق 10 افراد ہلاک اور 30 سے زائد زخمی ہوگئے ہیں۔




انڈونیشیائی پولیس کی جانب سے جاری کی جانے والی حملہ آور خاندان کی تصویر

خبررساں اداروں کے مطابق خود کش حملہ آور میاں بیوی نے اپنے بچوں کو بھی خودکشی کے لئے استعمال کیا۔ جن کی دو بیٹیاں تھیں، ایک کی عمر 9 سال جبکہ دوسری کی عمر 12 سال تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ دھماکے منصوبہ بندی کے تحت کیے گئے اور تینوں دھماکوں میں 10 منٹ کا وقفہ تھا جب کہ دھماکوں کے بعد شہر کے تمام گرجا گھروں کو بند کردیا گیا ہے۔ حملہ آوروں نے پہلے دھماکے میں سینتا ماریا رومن کیتھولک چرچ کو صبح ساڑھے 7 بجے نشانہ بنایا جس کے بعد دوسرے مقام پر جی پی پی ایس پینٹی کونٹل چرچ پر حملہ ہوا۔ 


ایسٹ جاوا پولیس کے ترجمان فرانس برنگ منگیرا کا کہنا ہے کہ تینوں حملوں میں مجموعی پر 35 زخمیوں کو تشویشناک حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا جب کہ ہلاکتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ہے۔دوسری جانب انڈونیشیا کے خفیہ ادارے نے تصدیق کی ہے کہ خودکش حملوں میں داعش کی ذیلی تنظیم جمع انشورت دولہ ملوث ہے۔




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں