30 مئی، 2018

کوکا۔کولا کے تعاون سے کشف کے پسرور ووکیشنل مرکز میں 300 خواتین نے تربیت مکمل کیں

 

50فیصد سے زائد خواتین کو پیشہ ورانہ ٹریننگ مکمل ہوتے ہی مارکیٹ سے آرڈر موصول ہونا شروع ہوگئے

پسرور: کشف فاونڈیشن اور کوکا۔کولا کے مالی تعاون سے چلنے والے پروجیکٹ ورلڈ اکنامک امپاورمنٹ پروگرام کے اشتراک سے 300 خواتین طالب علموں نے پسرور ووکیشنل ٹریننگ سینٹر سے تربیت مکمل کرلی ہے۔ اس پروگرام کے تحت سال 2017 سے اب تک مقامی سطح پر پانچ ووکیشنل ٹریننگ مراکز قائم کئے جاچکے ہیں اور یہ ووکیشنل تربیتی مراکز علاقے میں کم آمدن کی حامل گھرانے کی مقامی خواتین کو تین ماہ کی تربیت فراہم کرتے ہیں۔ اس تربیت میں خواتین کے لئے فٹبال کی سلائی جیسے غیرروایتی کام پر توجہ دی جاتی ہے۔ اس تقریب میں تربیت مکمل کرنے والی تمام طالبات، کشف فاو ¿نڈیشن کی منیجنگ ڈائریکٹر روشانہ ظفر اور کوکا۔کولا پاکستان کے ڈائریکٹر پبلک افیئرز اینڈ کمیونکیشنز فہد قادر نے شرکت کی۔ 



تقریب میں فہد قادر نے کہا، "پاکستان بھر میں کم آمدن کے حامل گھرانوں کی خواتین کی ضروریات پوری کرنے اور ان کی آمدن بڑھانے کے لئے کوکا۔کولا نے کشف فاو ¿نڈیشن کے ساتھ پہلی بار سال 2011 اشتراک کرکے مائیکروفنانس پروجیکٹ کی بنیاد رکھی۔ اس کے بعد سے اب تک اس پروجیکٹ نے کثیر الجہتی طریقہ کار اختیار کیا جس میں خواتین کی بااختیاری کے لئے صنفی تربیت اور کاروبار کرنے والی خواتین کے لئے مالیاتی انتظام کے کورسز شامل ہیں۔ یہ پاکستان کے پسماندہ طبقے کی خواتین کو قومی دھارے میں لانے کے لئے ایک بہترین قدم ہے۔ بااختیار خواتین ملکی معیشت اور معاشرے کی صحت مندانہ ترقی کے لئے نمایاں انداز سے تعاون کرتی ہیں۔" 

گزشتہ سات سالوں میں اس پروجیکٹ کی بدولت 7500 سے زائد کاروبار کرنے والی خواتین کو بااختیار بنایا گیا ہے اور یہ پروجیکٹ پسرور ووکیشنل سینٹر سے تربیت کی فراہمی کے بعد کم آمدن کے حامل گھرانے کی خواتین کو کاروباری شعبے میں داخل کرنے کے لئے سہولت فراہم کرنے کے قابل ہوگیا ہے۔ اس کے نتیجے میں تربیت اور روزگار کے درمیان خلا کم ہوگا۔ کوکا۔کولا کا عالمی پروگرام 5بائی 20 کا عزم ہے کہ سال 2020 تک 5ملین سے زائد خواتین کو بااختیار بنایا جائے اور کشف فاو ¿نڈیشن اس کام میں تعاون فراہم کررہی ہے۔ 

کوکا۔کولا پاکستان کے ساتھ اس شراکت داری کے بارے میں روشانہ ظفر نے کہا، "گزشتہ سات سالوں سے جاری اس اشتراک نے بھاری سرمایہ کاری جنم لی ہے اور اس نے پاکستان کی مالی طور پر کمزور گھرانے کی خواتین کو معاشی طور پر مستحکم بنایا ہے ۔ فٹبال کی سلائی جیسی نئی مہارت سیکھنے سے نہ صرف خواتین کو زیادہ بہتر معاوضہ ملے گا بلکہ روزگار کے بہتر مواقع کے ساتھ اس انڈسٹری میں مردوں کی بالادستی جیسی روایتی رکاوٹ بھی ٹوٹتی ہیں۔" 

کشف کی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ووکیشنل تربیت سے اجرت، روزگار، نقل و حمل اور روزگار کے مواقع پر مثبت اثر پڑا ہے۔ ووکیشنل تربیت کے ساتھ مالی امور کی تربیت، خود آگہی اور خود اعتمادی کی بدولت خواتین کو زیادہ معاشی فائدے حاصل ہوسکتے ہیں۔ کشف کی جانب سے پچھلی ووکیشنل تربیت پانے والی تقریبا 67 فیصد خواتین اب اپنا کاروبار کر رہی ہیں اور اس تربیتی پروگرام میں فٹبال کی سلائی سیکھنے والی 50 فیصد خواتین کو مارکیٹ اور مختلف فیکٹریوں سے فٹبال کی سلائی کے آرڈر موصول ہونا بھی شروع ہوگئے ہیں۔ 



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں