2 اگست، 2018

بچوں کو ماں کا دودھ پلانے کے لئے سول سائٹی کا عملی اقدامات پر زور

 



کراچی  : ورلڈ بریسٹ فیڈینگ ویک ہر سال یکم سے لیکر 7 اگست تک دنیا بھر میں منایا جاتا ہے جس کا مقصد بچوں کے لئے ماؤں کے دودھ کی اہمیت اجاگر کرنا ہے تاکہ بچے صحت مند رہیں۔ اس سال ڈبلیو بی ڈبلیو کی تھیم ’بریسٹ فیڈینگ: فاؤنڈیشن آف لائف‘ ہے۔ بریسٹ فیڈینگ سے بچوں اور ماؤں دونوں کے لئے بڑے فائدے ہیں، چاہے وہ غریب ہوں یا امیر۔ معروف طبی جریدہ کے مطابق ’بریسٹ فیڈینگ زندگیاں بچاتی اور صحت بہتر بناتی ہے۔ بہترین غذائی جزو کے طور پر ماں کا دودھ بچے کے لئے لازم و ملزوم ہے اور ہر سال 8 لاکھ 20 ہزار زندگیاں بچانے کا باعث بنتی ہیں ، ان میں سے 87 فیصد 6 ماہ سے کم عمر بچے ہوتے ہیں۔ یہ دودھ بچوں کو روشن مستقبل کے لئے تیار کرتا ہے۔ اس کے علاوہ بریسٹ فیڈنگ سے بچے اور نوجوان ذہانت کے امتحان میں بہترین کارکردگی کے حامل ہوتے ہیں۔

ملک میں مخصوص ثقافت کی وجہ سے بریسٹ فیڈینگ کی قبولیت کے باوجود بوٹل فیڈینگ کا رجحان سب سے زیادہ ہے اور جنوبی ایشیائی خطے کے اندر پاکستان میں ماں کا دودھ پلانے کا رجحان سب سے کم ہے ۔ بریسٹ فیڈینگ کا تناسب پاکستان میں بڑھا ہی نہیں، گزشتہ 7 سالوں میں بھی اس میں کوئی خاص اضافہ نہیں دیکھا گیا۔ ڈیموگرافیک ہیلتھ سروے کے مطابق سال 7-2006 میں ماں کا دودھ پلانے کی شرح 37.1 فیصد رہی جبکہ 13-2012 میں ماں کا دودھ پلانے کی شرح معمولی اضافے سے 37.7 فیصد ہوگئی ۔ جبکہ بوٹل فیڈینگ میں پاکستان کا کوئی مقابلہ نہیں۔ بوٹل فیڈینگ کی شرح پہلے سے ناگوار حد تک 07-2006 میں 32.1 تھی جو سال 13-2012 میں 41 فیصد کی تشویشانک حد پہنچ گئی تھی۔ 

پاکستان ان 118 ممالک میں شامل تھا جنہوں نے مئی 1981 میں ورلڈ ہیلتھ اسمبلی کے دوران بریسٹ فیڈنگ سبسٹی ٹیوٹ کے انٹرنیشنل کوڈ آف مارکیٹنگ کے حق میں ووٹ دیا تھا۔ تاہم اس کے لئے پاکستان میں قانون سازی بہت بعد میں ہوئی جب 26 اکتوبر 2002 میںیہ قانون The Protection of Breast Feeding and Child Nutrition, Ordinance 2002(XCIII2003) پاس ہوا۔ اور پاکستان اس قانون سازی کے ساتھ کوڈ کے آرٹیکلز کو اختیار کرنے والے 42 ممالک میں شامل ہوگیا ۔ اس وقت تمام صوبے بریسٹ فیڈنگ کے تحفظ اور ترقی کے لئے قانون سازی کرچکے ہیں ، تاہم ان قوانین کا اطلاق اب تک نہیں ہوپایا ہے۔ 

150 سے زائد سول سوسائٹی کے اداروں کے اتحاد اسکیلنگ اپ نیوٹریشن سول سوسائٹی الائنس پاکستان (SUNCSA, Pak) 52 یونیورسیٹوں کا ایک نیٹ ورک سن ایکیڈمیا اینڈ ریسرچ نیٹ ورک پاکستان کے اشتراک سے کمیونٹی اور صوبائی سطح پر مختلف سرگرمیاں کروارہا ہے تاکہ اس سال کے دوران ورلڈ بریسٹ فیڈینگ ویک کی اہمیت کو اجاگر کیا جاسکے۔ اس میں وائبرنٹ سوشل میڈیا مہم بھی شامل ہے تاکہ بریسٹ فیڈینگ کی حوصلہ افزائی اور معاونت کے لئے سماجی ماحول بنایا جائے۔ 

بریسٹ فیڈینگ کی صورت حال بہتر بنانے کے لئے سول سوسائٹی کا اتحاد (SUNCSA, Pak) وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو تجویز دیتا ہے کہ ماو ¿ں کے دودھ کے متبادلوں سے متعلق قانون کا سختی سے اطلاق کریں، اور دودھ پلانے کی غرض سے ملازمت پیشہ خواتین کو کے لئے سازگار ماحول فراہم کریں، بریسٹ فیڈینگ کو یقینی بنانے کے لئے زچگی کی سہولیات فراہم کریں تاکہ ماں کے دودھ کے متبادل مصنوعی عذاو ¿ں کے استعمال کو کم سے کم کیا جائے۔ 


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں