27 ستمبر، 2018

چترال، لوائی بجلی گھرپر کام تیزی سے جاری، 69 میگاواٹ کا بجلی گھر 2022 تک 22 ارب کی لاگت میں مکمل ہوگا

 

چترال، لوائی بجلی گھرپر کام تیزی سے جاری، 69 میگاواٹ کا بجلی گھر 2022 تک 22 ارب کی لاگت میں مکمل ہوگا




چترال (ٹائمزآف چترال نیوز) چترال آبی ذخائر سے مالامال ہے۔ یہاں پر اگر صحیح طرح سے سرمایہ کاری کی جائے تو یہ ملک کی بجلی کی ضروریات پوری کرنے میں معاون ثابت ہوسکتا ہے۔ حال میں تعمیر ہونے والے گولین گول سے قومی گرڈ میں بجلی کی ترسیل کے بعد اب ایک اور پن بجلی گھر لوائی کے مقام پر تکمیل کے قریب ہوتا جارہا ہے۔ اس بجلی میں کام زور وشور سے جاری ہے۔ 

خیبرپختونخواہ انرجی ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن کے ترجمان کے مطابق بجلی گھر پر کام تیزی سے جاری ہے۔ اور 2022 تک 22 ارب روپے کی لاگت سے مکمل ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ چترال میں 2900 میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی گنجائش موجود ہے۔ چترال آبی وسائل سے مالامال ضلع ہے۔

یاد رہے کہ مذکورہ بجلی گھر کی بنیاد عوامی نیشنل پارٹی نے جون 2012 میں رکھی تھی۔ بنیاد اس وقت کے وزیر اعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی نے رکھی تھی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں