26 ستمبر، 2018

وادی رمبور میں آبپاشی کی نہریں ٹوٹ پھوٹ کا شکار۔ عوام اپنی مدد آپ کے تحت لکڑی چھیر کر پانی کے نالے بنار ہے ہیں مگر محکمہ آبپاشی حاموش ہے۔

 

چترال(گل حماد فاروقی) وادی کیلاش کے رمبور گاؤں میں زمیندار گوناگوں مشکلات سے دوچار ہیں اس وادی کے مرد و خواتین کھیتی بھاڑی کرتے ہیں اور زیادہ تر ان فصلوں پر انحصار کرتے ہیں مگر ان لوگوں کی ذرعی زمین کو سیراب کرنے کیلئے کوئی حاص نہری نظام نہیں ہے۔ علاقے کے عوام نے اپنی مدد آپ کے تحت ندی نالے بنائے ہیں جس میں دور دراز سے پانی لاکر زمینوں کو سیراب کرتے ہیں ۔ 

ان زمینداروں نے لکڑی کے تنے کو چھیر کر اس میں سے نالہ بنایا ہے جو پائپ کا کام کرتا ہے مگر نہایت بوسیدہ ہونے کی وجہ سے زیادہ تر پانی اس نالے سے نیچے بہہ کر ضایع ہوتا ہے۔

ایک کیلاش زمیندار منیر نے بتایا کہ محکمہ آبپاشی کی طرف سے اس وادی میں کوئی نہر یا نالہ نہیں بنا ہے ہم نے اپنی مدد آپ کے تحت دور دراز سے پانی لکڑی کے ان نالوں کے ذریعے لایا ہے مگر زیادہ تر یہ حراب ہونے کی وجہ سے پانی اس کے سوراح سے نیچے بہتا ہے اور بہت کم پانی ان کے کھیتوں کو پہنچتا ہے۔ 

کیلاش اور مسلمان دونوں زمینداری کرتے ہیں مال مویشی پالتے ہیں اور یہاں کا لوبیا نہایت مشہور ہے مگر مناسب پانی کا انتظام نہ ہونے سے یہ زمیندار نہایت مشکلات سے دوچار ہیں مقامی لوگ مطالبہ کرتے ہیں کہ محکمہ آبپاشی اس وادی میں بھی بہتر نہری نظام بنائے اور ا ن کی ندی نہریں تعمیر کرے تاکہ یہاں کے لوگ زیادہ فصل اگا سکے۔




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں