26 اکتوبر، 2018

ناجائز اثاثہ بنانے والے 4 سابق وفاقی وزراء اور 13 بیوروکریٹس نیب کے راڈار پر آگئے

 

ناجائز اثاثہ بنانے والے 4 سابق وفاقی وزراء اور 13 بیوروکریٹس نیب کے راڈار پر آگئے


اسلام آباد (ویب ڈیسک) منی لانڈرنگ اورناجائز اثاثہ بنانے والے 4 سابق وفاقی وزراء اور 13 بیوروکریٹس نیب کے راڈار پر آگئے۔  ناجائز اثاثہ جات بنانے پر چار سابق وفاقی وزراء اور تیرا بیورو کریٹس کے خلاف تحقیقات جاری ہیں۔  اطلاعات کے مطابق خواجہ آصف سمیت چار سابق وفاقی وزراء اور تیرہ بیوروکریٹس کےحوالے سے تفتیش جاری ہے۔ پنجاب کے ایک سابق وزیر کی اہلیہ این جی او کے ذریعے منی لانڈرنگ کرتی تھی،اس حوالے سے بھی اہم اداروں نے ثبوت حاصل کر لئے ہیں۔ذرائع نے بتایا کہ آئندہ چند دنوں میں تحقیقات مکمل کرنے کے بعد ان تمام افراد کے خلاف باقاعدہ کارروائی شروع کی جائے گی،سابقہ دور حکومت میں اربوں روپے کی منی لانڈرنگ کس طرح ہوتی رہی، کون کون اہم ترین وزرا اور سرکاری شخصیات ملوث رہیں، سندھ کی طرح پنجاب کے اندر کس طرح جعلی کمپنیاں اور جعلی اکاؤنٹس بنائے گئے۔ اس حوالے سے انوسٹی گیشن کرنے والے اداروں نے اہم ثبوت حاصل کر لئے ہیں،ذرائع نے بتایا کہ نو ایسے افراد کے خلاف بھی تفتیش جاری ہے جنہوں نے جعلی اکاؤنٹس کے ساتھ ساتھ ایسی کمپنیاں بھی بنا رکھی ہیں جو منی لانڈرنگ اور کرپشن کا مال چھپانے کیلئے استعمال کی جا رہی تھیں۔



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں