25 اکتوبر، 2018

چترال: رات کے تاریکی میں لاکھوں روپے کی قیمتی عمارتی لکڑی اسمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام۔ دو ملزمان گرفتار۔

چترال: رات کے تاریکی میں لاکھوں روپے کی قیمتی عمارتی لکڑی اسمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام۔ دو ملزمان گرفتار۔ دیار کی قیمتی لکڑی کے اوپر آلو کے بوریاں رکھ کر اس کے نیچے چھپاکر نیچے لے جانے کا پروگرام تھا۔ ملزمان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دئے گئے۔



چترال(گل حماد فاروقی) محکمہ جنگلات کے اہلکاروں نے لاکھوں روپے مالیت کی دیار کی قیمتی لکڑی نیچے اضلاع اسمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام بنادی۔ سب ڈویژنل فارسٹ آفیسر عمیر نواز کے مطابق محکمہ جنگلات کے عملہ کو مخبر نے اطلاع دی کہ ایک ٹرک رجسٹریشن نمبر پشاور C-8945 جس میں دیار کی نہایت قیمتی لکڑی کی سلیپر رکھے تھے جن کی مالیت پندرہ لاکھ روپے بنتی ہے اس ٹرک میں یہ عمارتی لکڑی غیر قانونی طریقے سے رکھ کر اس کے اوپر آلو کی بوریاں رکھ رہے تھے تاکہ یہ ظاہر کرے کہ اس ٹر ک میں آلو لے جایا رہا ہے ۔ فارسٹ بلاک آفیسر عزیز ولی کے نگرانی میں محکمہ جنگلات کے عملہ نے رات کے تاریکی میں بر وقت چھاپہ مارکر دونوں ٹرکوں کو اپنے تحویل میں لے لیا تاہم ملزمان رات کی تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے بھاگ گئے مگر فارسٹ سٹاف نے صبح ان کی نشان دہی کرتے ہوئے ان کو گرفتار کرروایا اور ان کے حلاف فارسٹ ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرکے فارسٹ مجسٹریٹ کے عدالت میں پیش کئے گئے جنہوں نے ان کو جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا۔ ملزمان میں اورنگ زیب ولد بادشاہ زادہ سکنہ دیر قولنڈی اور صدر الدین ولد شمس الدین سکنہ دنین چترال شامل ہیں تاہم فارسٹ کا عملہ آلو والے ٹرک کے دو ملزمان سے بھی پوچھ گچ کررہے ہیں اور ان کے حلاف بھی مقدمہ درج کیا جائے گا۔ 

عزیز ولی نے بتایا کہ ان کو محبر نے اطلاع دی تھی کہ دنین کے مقام پر ایک آرا مشین میں ایک ٹرک کھڑا ہے جس میں دیار کی قیمتی لکڑی لوڈ کرکے نیچے اضلاع کو لے جانے کا پروگرام ہے جبکہ اس کے ساتھ ایک اور مزدا نمبر AJ 4139 کھڑی ہے جس میں آلو کی بوریاں پڑی ہے اور پروگرام یہ ہے کہ یہ آلو ان قیمتی عمارتی لکڑی کے اوپر رکھ کر ان کو چھپایا جائے گا اور اسے موقع پا کر نیچے اضلاع کو لے جایا جائے گا جہاں اس کی قمیت بہت زیادہ بنتی ہے۔ عزیز ولی نے مقامی پولیس کو بھی اطلاع دی اور اپنا عملہ بھی بلایا عین وقت پر SDFO عمیر نواز کو بھی بلایا گیا اور گواہان کے رو برو ٹرک سے دیار کے بڑے بڑے سلیپر برآمد کرکے ٹرک کو اپنے قبضہ میں لیا اور اسے اپنے دفتر واقع دنین میں کھڑ ا کیا۔ 

ملزمان کے حلاف مقدمہ درج کرکے مزید تفتیش شروع کردی گئی تاہم جس مزدا میں آلو تھا وہ اسمگلر نہایت چالاک لگ رہا ہے اس کا کہنا ہے کہ اس نے یہ آلو کسی اور شحص کو فروخت کیا تھا اور اس کے کہنے پر گاڑی آرا مشین میں کھڑا کیا تھا آگے پتہ نہیں کہ اس نے اس آلو کو کیسے اور کس کو بیچنا تھا

ایک سوال کے جواب میں عمیر نواز نے بتایا کہ ان کا عملہ زیادہ تر لوہے کی سریا کی مدد سے ٹرک میں لگاکر دیکھتا ہے کہ اس سامان کے نیچے کوئی لکڑی تو نہیں مگر کباڑ یا آلو کی صورت میں یہ سریا نیچے نہیں جاتا اگر اس کی جگہہ ان کو ایسے ڈیڈکٹر مشین دی جائے جس کی مدد سے وہ ٹرک کا ایکسرے یا سکریننگ کرکے معلوم کرسکے کہ ٹرک میں پڑے ہوئے سامان کے نیچے کوئی عمارتی لکڑی تو نہیں تو اس کی بدولت دیار یا دیگر قیمتی لکڑیو ں کی اسمگلنگ کی روک تھا م ہوسکے گی۔

آزاد ذرائع کے مطابق ہوسکتا ہے ان آلو لے جانے والے ٹرکوں میں پہلے سے دیار کی لکڑی اسمگلنگ کیا جارہا ہو مگر اب چونکہ فارسٹ عملہ کو پتہ چل گیا تو اس کے بعد فارسٹ کا عملہ نہایت احتیاط سے ان ٹرکوں کی تلاشی لے گی تاکہ ان میں لکڑی اسمگل نہ کی جاسکے۔ سماجی اور سیاسی طبقہ فکر نے محکمہ جنگلات کی اس اقدام کو نہایت سراہا ہے کہ انہوں نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے رات کی تاریکی میں دیار کی یہ قیمتی لکڑی اسمگلنگ ہونے سے بچایا۔

محکمہ جنگلا ت کے شکایت پر متعلقہ آرا مشین بھی سر بمہر کردی گئی اور عدالتی حکم تک یہ مشین اور اس کے اندر کھڑا ہوا آلو کا مزدا گاڑی بھی سیل ہوں گے۔ 




کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں