12 نومبر، 2018

واپڈا کالونی کوغزی میں گولین گول پاور کمیٹی کی جانب سے احتجاجی مظاہرہ، کوغزی کے متاثرہ عوام کے اہم مطالبات پیش کئے گئے

 

واپڈا کالونی کوغزی میں گولین گول پاور کمیٹی کی جانب  سے احتجاجی مظاہرہ، کوغزی کے متاثرہ عوام کے اہم مطالبات پیش کئے گئے



 چترال، کوغزی : (ایم۔ فاروق) واپڈا کالونی کوغزی میں گولین گول پاور کمیٹی کی جانب  سے احتجاجی مظاہرہ، کوغزی کے متاثرہ عوام کے اہم مطالبات پیش کئے گئے۔  تفصیلات کے مطابق پیر کے روز کوغزی میں واپڈا کالونی گیٹ کے سامنے کوغزی کے عوام کی جانب سے ایک احتجاجی جلسہ منعقد کیا گیا جس میں علاقے کے سیاسی و سماجی شخصیات سمیت مقامی لوگوں نے بھرپور تعداد میں شرکت کی۔ 

اس جلسے کی صدارت گولین گول پاؤر کمیٹی کے چئیرمین جناب شریف حسین نے کی۔ بعد اذان انہوں نے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گولین گول پراجیکٹ کے آغاز سے لے کر اختتام تک یہاں کے عوام کے ساتھ دھوکا کیا گیا، شروع کے دنوں میں متعلقہ ادارہ واپڈا اور سامبو کنسٹرکشن کمپنی کی جانب سے وعدے اور دعوے کیے گئے تھے لیکن وہ وعدے ابھی دھرے کے دھرے رہ گئے۔ انہوں نے کہا کہ کوغزی کے متاثرہ لوگوں کو اعتماد میں لینے کے لئے واپڈا کی طرف سے علاقے کے لوگوں کے لئے تین کروڑ روپے کی منظوری  ہوئی تھی اور اس سدباب میں پاور کمیٹی نے جو منصوبہ جات پراجیکٹ ڈائریکٹر جاوید آفریدی کو تحریری طور پر دی تھی اس پر جلد کام شروع کیا جائے۔ یہاں پر ٹرانسمیشن لائن کی ترسیلی کے دوران لوگوں کے پھلدار وغیر پر دار درختوں کی بے دریغ کٹائی کی گئی اور درختوں کا صحیح معاوضہ ادا کیا جائے۔ محکمہ واپڈا میں وعدے کے مطابق مقامی لوگوں کو ملازمتیں دی جائے۔ گولین گول پاور پراجیکٹ پر کام کرنے والی سامبو کنسٹرکشن کمپنی گولین کے مقام پر پلانٹ لگایا تھا اور متعلقہ جگہ کے لئے ساٹھ لاکھ روپے کرایہ ادا کرنے کا بھی وعدہ ہوا تھا وہ رقم جلد از جلد عوام کو ادا کی جائے اور اس جگہ کو دوبارہ سے ہموار کر دی جائے۔ وہاں پر موجود پتھر، بجری، ریت اور دوسری میٹیریل عوام کی ملکیت ہے ۔  انہوں نے مزید کہا کہ اگر ہمارے مطالبات نہ مانے گئے توہم بھرپور انداز میں احتجاج کریں گے جس کا ذمہ دار چترال کا انتظامیہ ہوگا۔






کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں