9 نومبر، 2018

چترالیوں کا دیرینہ خواب پورا ہوگیا، کابینہ نے چترال کو دو اضلاع میں تقسیم کرنے کی منظوری دے دی

 




چترالیوں کا دیرینہ خواب پورا ہوگیا، کابینہ نے چترال کو دو اضلاع میں تقسیم کرنے کی منظوری دے دی



پشاور(ٹائمزآف چترال نیوز) خیبر پختونخواہ کابینہ نے جمعرات کو چترال کو دو اضلاع میں تقسیم کرنے کی منظوری دے دی۔ کابینہ نے کے پی کے کے انرجی اور پاور ڈپارٹمنٹ کو 135 بلین سالانہ نیٹ ہائیڈل پروفٹ کیس کو کونسل آف کومن انٹریسٹ (سی سی آئی) میں پیش کرنے اور صوبے کے سب سے بڑے ضلع، چترال کو بہتر انتظام کے لئے 2 اضلاع میں تقسیم کرنے کی بھی منظوری دے دی ہے۔ کابینہ اجلاس کی صدارت چیف منسٹر محمود خان نے کی۔

اجلاس کے بعد سول سیکریٹٹری، سنیٹین کمرہ میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے خیبر پختونخواہ کے وزیر اطلاعات شوکت یوسف زئی نے کہا کہ کابینہ نے دو اضلاع لوئرچترال اور اپر چترال کی منظوری دے دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ چترال صوبے کا سب سے بڑا ضلع ہے، 2 اضلاع بنانا چترالیوں کا دیرینہ مطالبہ تھا، دو اضلاع کی منظوری2017 میں ہوئی تھی۔ تاہم اس ضمن میں کوئی نوٹی فی کیشن جاری نہ ہوسکا تھا کیونکہ صوبائی کابینہ نے اس کی منظوری نہیں دی تھی۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

تازہ ترین خبریں