اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

27 دسمبر، 2018

اسلامی دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم محترمہ بے نظیر بھٹوشہید کا 11 واں یوم شہادت آج منایا جارہاہے

 

اسلامی دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم محترمہ بے نظیر بھٹوشہید کا 11 واں یوم شہادت آج منایا جارہاہے

اسلام آباد (ٹائمزآف چترال نیوز) کراچی میں ناکام حملے کے بعد دہشت گرد بے نظیربھٹو کا پیچھا نہیں چھوڑے۔ کراچی میں ان کے قافلے پر خوفناک حملے میں 180 جیالے جان کی بازی ہار گئے تھے تاہم اس وقت بے نظیر بھٹو بال بال بچ گئی تھی۔ دہشت گردوں نے لیاقت باغ میں ان کے بڑے اجتماع میں ایک پھر ان پر حملہ کیا اور جب وہ گاڑی سے باہر سر نکال کر جیالوں کو ہاتھ ہلا کر الوداع کررہی تھی تو دہشت گردوں نے ان پر فائرنگ کردیں اور انہیں زخمی حالت میں ہسپتال لے جایا گیا لیکن راولپنڈی جنرل ہسپتال میں 6 بجکر 16 منٹ پر ان کے جان بحق ہونے کی تصدیق کردی گئی۔ پھر کیا ہوا، سب جانتے ہیں۔ اور یوں دختر مشرق اور مسلم دنیا کی پہلی خاتون وزیر اعظم محترمہ بےنظیر بھٹوشہید ہوگئیں۔ آج ان کا گیارواں یوم شہاد ت آج منایاجارہا ہے ۔

بے نظیر بھٹو 21 جون 1953 کو کراچی میں پیدا ہوئیں اور 27 دسمبر 2007 کو پنڈی میں دہشت گردانہ حملے میں قتل شہید کردی گئیں۔ بے نظیر پاکستان کی اہم سیاسی شخصیات میں سے ایک تھی۔ 1988 سے 1990 تک پاکستان کی وزیراعظم رہیں۔ اور پھر 1993 میں منتخب ہوئیں اور 1996 تک اس عہدے پر رہیں۔ کسی بھی اسلامی ملک میں جمہوری حکومت کی نمائندگی کرنے والی وہ پہلی مسلم خاتون تھیں۔

بے نظیر بھٹو شہید کے یوم شہادت کے سلسلے میں ملک کے چھوٹے بڑے تمام شہروں میں تعزیتی سیمینار منعقد کئے جائیں گے جن میں مقررین پاکستان اورجمہوریت کیلئے محترمہ بے نظیربھٹوکی خدمات پر روشنی ڈالیں گے ۔

اس موقع پر حکومت سندھ کی جانب سے صوبے میں عام تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے ، بے نظیر بھٹو شہید کی برسی کے موقع پر مرکزی تقریب گڑھی خدابخش میں ہوگی جس سے پیپلزپارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری اور شریک چیئر مین آصف علی زرداری سمیت اہم پارٹی رہنما خطاب کریں گے ، اس موقع پر پیپلزپارٹی کی جانب سے مستقبل کے حوالے سے اہم فیصلوں کااعلان کرنے کی توقع بھی کی جارہی ہے جو ملکی سیاست کی تاریخ میں ہلچل کا باعث ہوسکتے ہیں۔





کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں