10 دسمبر، 2018

سات دسمبر 2016 کو پی آئی اے حادثے میں شہید ہونے والوں کی دوسری برسی منائی گئی۔ اس سلسلے میں تقریب کا بھی انعقاد ہوا۔

 

سات دسمبر 2016 کو پی آئی اے حادثے میں شہید ہونے والوں کی دوسری برسی منائی گئی۔ اس سلسلے میں تقریب کا بھی انعقاد ہوا۔



چترال(گل حماد فاروقی) سات دسمبر 2016 کو قومی ائیر لائن (PIA) کی فلائٹ پی کے 661 جو حویلیاں میں حادثے کا شکار ہوا تھا اس میں 43 افراد جان بحق ہوئے تھے جن میں 20 کا تعلق چترال سے تھا۔ ان شہداء کی یاد میں گورنمنٹ سینٹینل ماڈل ہائی سکول چترال میں قرآن خوانی بھی کی گئی اور بعد میں شہید اسامہ وڑائچ کیرئیر اکیڈیمی میں ایک تعزیتی تقریب بھی منعقد ہوئی جس میں ڈپٹی کمشنر چترال مہمان حصوصی تھے جبکہ تقریب کی صدارت گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج کی پرنسپل کررہی تھی۔ اسی پرواز میں بین الاقوامی شہرت کے حامل نعت خوان اور مبلغ جنید جمشید اور ان کی اہلیہ بھی سفر کررہی تھی جو حادثے کے شکار ہوگئے۔ 

جنید جمشید کی پہلی اہلیہ نے ٹیلیفون پر اپنا پیغام سنایا اور لوگوں پر زور دیا کہ جنید جمشید نے اپنی زندگی اللہ کے راستے میں تبلیغ کیلئے وقف کی تھی اور زندگی کا مقصد بھی اللہ کو راضی کرنا ہے۔انہوں نے لوگوں پر زور دیا کہ وہ بھی اللہ کو خوش رکھنے کی کوشش کرے کیونکہ موت کا کوئی وقت معلوم نہیں ہے۔ 

سلمان زین العابدین کے بھائی نے ابھی اظہار حیال کرتے ہوئے کہا کہ سلمان ایک اعلےٰ تعلیم یافتہ تھے اور میری والدہ نے اس سے پہلے بھی ایک جوان بیٹے بچھڑنے کا غم دیکھا تھا جو بم دھماکے میں جاں بحق ہوا تھا۔ 

چترال کے سابق ڈپٹی کمشنر اسامہ احمد وڑائچ جو اپنی چھوٹی بیٹی اور بیوی کے ساتھ اسی جہاز میں شہید ہوئے تھے اس کے والد محترم نے بھی فو ن پر اپنا پیغام سنایا۔ ڈپٹی کمشنر نے شرکاء سے اظہار حیا ل کرتے ہوئے کہا کہ وہ چترال میں دو افراد سے متاثر ہوا ہے جواب اس دنیا میں نہیں ہیں ایک اسامہ وڑائچ اور دوسرا خالد بن ولی جن کے نماز جنازہ میں ہزاروں لوگو ں نے شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہ اس کی بنیادی وجہ یہ ہے ان دونوں نے عوام کی خدمت کی تھی اور لوگوں کو اپنے اچھے اخلاق سے متاثر کیا تھا۔ہمیں بھی چاہئے کہ لوگوں کی چھوٹی چھوٹی مسائل حل کرکے ان کی دعائیں لے۔ تقریب میں کثیر تعداد میں طلبا ء طالبات نے بھی شرکت کی ۔آحر میں سات دسمبر کو پی آئی اے کے حادثے میں مرحومین کی روح کی ایصال ثواب کیلئے فاتحہ حوانی بھی کی گئی۔ 


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں