اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

28 دسمبر، 2018

دولوموچ میں 70 سال بعد آبنوشی سکیم کا افتتاح۔ کالونی میں پانی آنے سے لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی۔

 

دولوموچ میں 70 سال بعد آبنوشی سکیم کا افتتاح۔ کالونی میں پانی آنے سے لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی۔

چترال(گل حماد فاروقی) چترال کے مضافاتی علاقے دولوموچ ، چنار کالونی کیلئے پہلی بار باضابطہ طور پر پانی کی منصوبے کا افتتاح ہوا۔ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر چترال منہاس الدین اس موقع پر مہمان حصوصی تھے۔ ڈیڑ ھ کروڑ روپے AKAH آغا خان ایجنسی فار ہیبٹل نے یورپین کمیشن کی فنڈ سے اس منصوبے کو کامیاب بنایا۔ انجنیر الطاف نے بتایا کہ اس منصوبے کیلئے شہزادہ کرنل شریف نے مفت زمین فراہم کی جس پر دریائے چترال کے کنارے انتیس 29 فٹ گہرا پانی کا تالاب بنایا جس میں دریا کا پانی قدرتی طور پر فلٹر ہوکر آتا ہے اور اسے چھ انچ پائپ کے ذریعے دولوموچ کالونی کو پہنچایا ہے جو سڑک سے دو سو فٹ کے اونچائی پر واقع ہے۔ یہ سین لشٹ اور آس پاس کے علاقوں کو ملحوظ نظر رکھ کر یہ منصوبہ بنایا گیا ہے۔ اس منصوبے سے چار ہزار لوگ استفادہ کرسکیں گے۔ 180 ہارس پاؤر کا بجلی کا موٹر لگا ہے جو 26 لٹر پانی فی سیکنڈ اوپر پہنچاتا ہے۔ 

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے نے AKAH کے ریجنل پروگرام منیجر محمد کرم اور دیگر عمائدین کے ساتھ کالونی میں اوپر چڑھ کر واٹر ٹینکر کا معائنہ کیا ۔ اس ٹینکی سے محتلف پائپ لائن کے ذریعے پانی گھرو ں اور کھیتوں میں جاتا ہے۔ اس سلسلے میں کمیونٹی بیسڈ سکول میں ایک سادہ مگر پروقار تقریب بھی منعقد ہوا جس سے علاقے کے عمائدین اور ادارے کے نمائندوں نے اظہار حیال کیا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ADC چترا ل نے کہا کہ ہم ان اداروں کے مشکور ہیں جو حکومتی اداروں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہوکر ترقیاتی کام کررہے ہیں اگر چہ یہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ اپنے شہریوں کو بنیادی سہولیات فراہم کرے مگر حکومت کے پاس وسائل کی کمی اور چترال کا رقبے کے لحاظ سے بہت بڑے ضلع کی وجہ سے یہ ممکن نہیں ہے کہ ہر کام سرکار ہی کرے اس میں غیر سرکاری ادارے بھی قابل قدر کردار ادا کر رہے ہیں انہوں نے AKAH کی کارکردگی کو نہایت سراہا جو اتنی کم رقم پر اتنا بڑا منصوبہ کامیاب کرکے عوام کے حوالہ کیا انہوں نے کہا کہ پرواک وغیرہ میں اکثر علاقے کے لوگ یہ شکایت لیکر آتے تھے کہ محکمہ پبلک ہیلتھ انجنیرنگ کے لوگ پانی کی منصوبوں میں چار فٹ کی بجائے ڈیڑھ فٹ تک کدھائی کرتے ہیں جبکہ WASEP والے چار فٹ کدھائی کرتے ہیں ۔

تقریب سے لیاقت علی، ظہران شاہ، محمد کرم اور دیگر نمائندوں نے اظہار حیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستا ن بننے کے بعد یہ پہلا کامیاب منصوبہ ہے جو اس پورے علاقے کے عوام اور زمین کو بھی سیراب کرتا ہے۔تقریب میں مہمانوں کو چترال کے روایتی ٹوپی بھی پیش کئے گئے۔ 

ہمارے نمائندے سے باتیں کرتے ہوئے شمس الرحمان تاجک نے کہا کہ AKAH چترال بھر میں پانی کی فراہمی کے 22 منصوبے مکمل کرچکے ہیں جس سے 70 ہزار لوگ استفادہ کررہے ہیں اور آج کا یہ منصوبہ اسی کڑی کا سلسلہ ہے جو جاری رہے گا۔ 

زبیدہ پروین جو دولوموچ کالونی کی رہایشی ہے نے بتایا کہ ہم بہت خوش ہیں اب ہم پینے کے ساتھ ساتھ اپنے کھیتوں کو بھی سیراب کریں گے اور اپنے گھروں میں بھی سبزیاں اگائیں گے اور جس جگہہ میں ہم کھڑے ہیں اب یہ جگہہ لق دق ریگستان کا منظر پیش کرتا ہے یہاں بھی ہم گھاس اگاکر پارک بنائیں گے جس میں ہمارے بچے کھیلیں گے۔ 

فہمیدہ بی بی جو ایک کالج کی طالبہ ہے نے بتایا کہ پہلے ان کے علاقے میں پانی نہیں تھی اور وہ کالج جانے سے پہلے سر پر مٹکے میں دور جاکر پانی لایا کرتی تھی جس سے ان کا وقت ضائع ہوتا اور کالج کا بھی دیر ہوتا مگر اب ان کی وہ مشکل آسان ہوگئی اور ان کے گاؤں میں پانی آگئی جس سے وہ بجا طو ر پر خوشی منارہے ہیں۔








کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں