اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

4 جنوری، 2019

سابقہ دور میں منظور شدہ چترال کے لئے ترقیاتی منصوبوں پر فوری طور پر دوبارہ کام شروع کیا جائے: پاکستان مسلم لیگ ن کے ورکرز کنونشن میں مطالبہ

سابقہ دور میں منظور شدہ چترال کے لئے ترقیاتی منصوبوں پر فوری طور پر دوبارہ کام شروع کیا جائے: پاکستان مسلم لیگ ن کے ورکرز کنونشن میں مطالبہ


چترال(گل حماد فاروقی) پاکستان مسلم لیگ ن گروپ کے کارکنوں کا کنونشن ڈسٹرکٹ ٹاؤن ہال میں منعقد کیا گیا جس کی صدارت پارٹی کے سینئر رہنماء زار عجم خان کر رہے تھے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کارکنو ں نے سابق وزیر اعظم میاں محمد نواز شریف کی خدمات کو نہایت سراہا۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف واحد وزیر اعظم تھے جو مصیبت کے ہر گھڑی میں چترال پانچ مرتبہ آئے اور متاثرین کو ہر قسم امداد فراہم کی۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف نے چترال کی پسماندگی مد نظر رکھتے ہوئے یہاں اربوں روپے کے ترقیاتی منصوبوں کی منظور ی دی جس میں لواری سرنگ کیلئے اربوں روپے کا فنڈ فوری طور پر ریلیز کرکے اس منصوبے کو پایہ تکمیل تک پہنچایا۔

انہوں نے موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے تبدیلی سرکار پہلے اپنے دھرنوں میں کہا کرتے تھے کہ اگر ڈالر کی قیمت بڑھ رہا ہو تو سمجھو کہ حکمران کرپٹ ہیں اب ڈالر کی قیمت 145 تک پہنچ گئی تو کون کرپٹ ہوسکتا ہے۔عام آدمی کو اس سے کوئی سروکار نہیں کہ کس کو پکڑا جاتا ہے اور کون جیل جاتا ہے بلکہ غریب آدمی کی زندگی کی دارومدار روزمرہ زندگی کے استعمال کے چیزوں پر ہوتا ہے اگر روزمرہ استعمال کی چیزوں کی قیمت سستا ہو تو ان کیلئے زندگی گزارنا آسان ہوتا ہے ورنہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ صوبہ خیبر پحتون خواہ میں معصوم بچوں کے ساتھ ریپ کے تین کیس ہوئے مگر تبدیلی سرکار پولیس اور حکومت کی تعریف کرتے نہیں تھکتا۔

انہوں نے وفاقی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس دور میں میڈیا پر قدغن لگنے سے اکثر صحافیوں کی معاشی استحصال ہوتا ہے اور کئی چینل بند ہوگئے ۔ مقررین نے کہا کہ حالیہ انتحابات میں ناکامی اپنوں کی غلطی سے ہوا کچھ منفی پروپیگنڈا کا نتیجہ بھی ہے۔

انہوں نے موجودہ رکن قومی اسمبلی مولانا عبد الاکبر چترالی پر سخت تنقید کیا کہ ایک عالم دین ہونے کے باوجود بھی جھوٹ بولتا ہے کہ ترکہو روڈ کیلئے اس نے فنڈ منظور کیا حالانکہ تورکہو روڈ کی تعمیر کیلئے سابقہ دور حکومت میں میاں نواز شریف نے فنڈ منظور کیا تھا۔

انہوں نے صوبائی اور قومی اسمبلی میں انتحابات کے دوران امیدواروں پر بھی تنقید کی کہ افتحار الدین قومی اسمبلی کی نشست کیلئے ٹکٹ کی دوڑ میں سب سے آگے تھے مگر اب اس اہم کنونشن میں موجود نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان اقتدار سے پہلے دعویٰ کرتے تھے کہ وہ دو سو ارب ڈالر کا امداد پاکستان لائے گا اور IMF جانے سے خودکشی اچھا ہے مگر نہ تو ڈالر آیا نہ اس نے خودکشی کی اور ایک بار پھر بھیک کا کچکول آگے پھیلایا۔

انہوں نے کہا کہ پٹرول کی قیمت بین الاقوامی مارکیٹ کے حساب سے چالیس روپے فی لٹر پڑتا ہے مگر یہاں سو روپے فی لٹر بکتا ہے۔ انہوں نے اس بات پر نہایت غم و غصے کا اظہار کیا کہ سابقہ حکومت میں لٹکو ہ روڈ، بمبوریت روڈ کیلئے فنڈ بھی منظور ہوا تھا اور ایل پی جی گیس پلانٹ بھی منظو ر ہوا تھا مگر تبدیلی سرکار نے ان تمام ترقیاتی منصوبوں پر کام روک کر چترال دشمنی کا ثبوت دیا۔

اجلا س میں ایک متفقہ قرارداد بھی منظور کی گئی جس میں نواز شریف اور شہباز شریف پر ہونے والے مظالم کا پر زور مذمت کی گئی۔ قرارداد کے ذریعے مرکزی قیادت سے مطالبہ کیا گیا کہ پارٹی کے بارے میں ضلعی قیادت اور دیرینہ کارکنوں سے مشاور ت کی جائے تاکہ پارٹی میں بد اعتمادی کی فضاء پیدا نہ ہوجائے۔ قرارداد کے ذریعے تبدیلی سرکار کی چترال دشمن پالیسیوں اور سابقہ حکومت کے منظور شدہ پراجیکٹ بند کرنے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا گیا۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں