اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

7 جنوری، 2019

چترال میں ایک زندہ مارخور کو بھی پکڑتے وقت مار دیا گیا۔ مارخور کی قیمت ڈیڑھ کروڑ روپے تک بتائی جاتی ہے۔

چترال میں ایک زندہ مارخور کو بھی پکڑتے وقت مار دیا گیا۔ مارخور کی قیمت ڈیڑھ کروڑ روپے تک بتائی جاتی ہے۔


چترال (گل حماد فاروقی) مارخور پاکستان کے قومی جانور ہونے کے ساتھ ساتھ یہ نہایت نایاب نسل کے جانور ہے جو پہاڑوں کے اونچائی پر رہتے ہیں۔ مارخور کی شکار کیلئے Hunting Trophy کے نام پر شکار کا پرمٹ جاری کیا جاتا ہے جس کی قیمت ایک کروڑ سے ڈیڑھ دو کروڑ تک بھی ہوسکتا ہے۔ ہر سال مارخور کی شکار کیلئے ہنٹنگ ٹرافی کیلئے بین الاقوامی سطح پر بولی ہوتی ہے اور جو شکاری سب سے زیادہ بولی یعنی ریٹ بتائے گا اسی کو شکار کا لائسنس ملے گا۔ 

چترال گول نیشنل پارک میں اس قسم کے قانونی شکار بھی ممنوع ہے مگر اس کے باوجود بھی یہاں غیر قانونی شکار کیا جاتا ہے جس سے چترال کو کروڑوں روپے کا نقصان ہوتا ہے۔ مارخور کے شکار سے ملنے والی رقم میں سے اسی فی صد مقامی لوگوں کو دی جاتی ہے جبکہ بیس فی صد سرکاری خزانے میں جمع ہوتا ہے۔

گزشتہ دنوں چترال گول نیشنل پارک کی ایک مارخور کو کسی شکاری نے غیر قانونی طور پر فائر کرکے زحمی کیا ۔ یہ زحمی مارخور علاقہ شغور میں آوی کی طرف بھاگ گئی اور جھاڑیوں میں چھپنے کی کوشش کی گئی۔ علاقے کے لوگوں نے دیکھا تو محکمہ جنگلی حیات چترال گول نیشنل پارک کے عملہ کو بتایا۔ اب اس مارخور کو زندہ پکڑنے کی ناکام کوشش میں اسے بھی مارڈالا۔ محکمے کے اہلکاروں کی نااہلی کی وجہ سے مارخور نے دریا میں چھلانگ لگایا اور ڈوب کر مر گئی۔ 

عوام مطالبہ کرتے ہیں کہ اس مارخور کو کس نے غیر قانونی طور پر مارا۔ اور پھر اسے محکمے کے اہلکاروں نے کیوں بچانے کی کوشش نہیں کی۔ اس سلسلے میں محکمہ جنگلی حیات چترال گول نیشنل پارک کے DFO ارشاد احمد سے بات کی گئی تو انہوں نے تصدیق کرلی کہ اس مارخور کو کسی شکاری نے غیر قانونی طور پر مارنے کی کوشش میں زحمی کی تھی جو بعد میں مر گئی اور اس مارخور کی ٹرافی کو وہ پشاور بھیج رہا ہے ۔ ڈی ایف او نے مزید بتایا کہ اسے اسلم بیگ نامی شحص نے مارا ہے جو آوی کا باشندہ ہے اور اس کے حلاف باقاعدہ قانونی کاروائی کی جائے گی جس میں ایک کمپونڈ کیس ہوتا ہے جس میں ملزم کچھ رقم جمع کرکے آزاد ہوجاتا ہے۔ دوسرا وہ عدالت کے ذریعے خود کو بے گناہ ثابت کرنے کی کوشش کرتا ہے یا اسے جرمانہ کے بعد چھوڑ دیا جاتا ہے۔ واضح رہے کہ مارخور ہنٹنگ ٹرافی میں اس کی قیمت ایک کروڑ تک شکاری ادا کرتا ہے مگر جب اسے غیر قانونی طور پر مارا جاتا ہے تو اس صورت میں چند ہزار روپے جرمانہ لیکر ملزم چھوڑ دیا جاتا ہے۔ اگر اس کی اصل قیمت کے برابر جرمانہ لیا جاتا تو پھر کوئی بھی جرات نہیں کرتا کہ مارخور کی غیر قانونی شکار کرسکے۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں