اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

14 جنوری، 2019

چترال - برف باری کے بعد سڑکوں، راستوں پر کھڑا پانی جم کر برف بن گئی، پیدل چلنا مشکل گاڑیاں بھی پھسل رہی ہیں

چترال - برف باری کے بعد سڑکوں، راستوں پر کھڑا پانی جم کر برف بن گئی، پیدل چلنا مشکل گاڑیاں بھی پھسل رہی ہیں 


چترال(گل حماد فاروقی) برف باری کے بعد اب عوام کیلئے مشکلات میں اضافے ہوا ہے سڑکوں اور راستوں پر کھڑی پانی رات کو موسم صاف ہونے کی وجہ سے جم کر برف بن چکی ہے اور اس پر چلنے والے نہ صرف پیدل لوگ پھسل جاتے ہیں بلکہ گاڑی بھی اس یح بستہ سڑ ک پر چلنا حطے سے حالی نہیں۔علاقے کے لوگ اکثر اپنی مدد آپ کے تحت ان راستوں سے برف ہٹا رہے ہیں تاکہ اس پر چلنے والے لوگ پھسل کر گرنے سے بچ جائے۔ 

لواری ٹنل کا راستہ بھی برف باری کے باعث بند ہے اور لواری سرنگ کے دونوں جانب یعنی دیر اور چترال کی جانب سڑک پر کھڑی پانی جم کر بالکل شیشہ کی طرح برف بن چکی ہے اور اس پر گاڑی چلنا ناممکن ہوا ہے اکثر گاڑی اس یح بن سڑک پر گزرتے ہوئے گرنے کا حطرہ ہوتا ہے۔ 
وادی کیلاش کی آحری گاؤں شیخانندہ میں مین گیل گول نالے میں برفانی تودہ گرنے سے بارہ افراد دب چکے تھے جن کو مقامی لوگوں نے اپنی مدد آپ کے تحت زندہ نکالنے میں کامیاب ہوئے تاہم دو افراد کو معمولی چوٹیں آئی ۔

برف باری کے بعد سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے اور زیادہ تر لوگ گھروں میں بیٹھ کر آگ کے سامنے گرم ہوتے ہیں تاکہ خود کو سردی سے بچائے۔ مقامی لوگ مطالبہ کرتے ہیں کہ چترال کے لوگوں کو ملاکنڈ اور ہنزہ کی طرح سستی بجلی یا گیس فراہم کی جائے تاکہ وہ کھانا پکانے اور گرم ہونے کیلئے لکڑیوں کی بجائے گیس یا بجلی استعمال کرے تاکہ اس سے جنگلا ت کی بے دریغ کٹائی بند ہوسکے۔ س



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں