اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

4 جنوری، 2019

بچوں سے ذیادتی کے واقعات کی روک تھام کے سلسلے تھانہ کوغزی میں ممبران PLCS کی میٹنگ اور آگاہی واک کا اہتمام

 

بچوں سے ذیادتی کے واقعات کی روک تھام کے سلسلے تھانہ کوغزی میں ممبران PLCS کی میٹنگ اور آگاہی واک کا اہتمام



چترال (رپورٹ ایم فاروق) گزشتہ دنوں سے ضلع چترال کے 18 تھانوں کے حدود میں PLC ممبران نے بچوں کے ساتھ  ذیادتی کے واقعات کی روک تھام کے سلسلے میں میٹنگ کا اہتمام کیا گیا ۔ 

اسی طرح 3 جنوری،2019 کو تھانہ کوغزی میں بھی ایک آگاہی میٹنگ اور واک کا اہتمام کیا گیا جس میں علاقے کے سیاسی سماجی اور ہر طبقہ فکر کے لوگوں نے  پولیس کے ساتھ مل کر  واک میں شرکت کی جن میں جناب شریف حسین، وی۔سی کوغزی کے نائب چیئرمین اعجاز احمد، وی۔سی گولین کے چیئرمین مفتی مطیع الرحمان، سماجی شخصیت کبیر اللّٰہ اور قاری بشیر احمد سمیت دیگر لوگ شامل تھے۔ 

اس واک کا مقصد چترال کی عوام میں بچوں سے ذیادتی کے واقعات کی اسباب اور اس کے سدباب کی آگاہی مہم اور علاقائی سطح پر عوام میں شعور پیدا کرنا ،تاکہ ملک کے دیگر اضلاع میں پیش انے والے واقعات سے بچا جاسکے ۔ یہ سچ ہے کہ چترال ایک پرامن ضلع ہے اس کے خوبصورت ماحول کو  کسی بھی صورت خراب ہونے نہیں دیں گے ۔   اس سلسلے میں تمام علاقوں میں خصوصی تقریب منعقد کئےجائیں گے تاکہ علاقہ میں غیر یقینی صورتحال سے بچاجاسکے۔
پروگرام کے اختتام پر علاقے کے معززین نے آگاہی میٹنگ اور واک کا اہتمام کرنے پر تھانہ کوغزی کے SHO اور پولیس ڈیپارٹمنٹ کا شکریہ ادا کیا۔


کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں