اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

15 فروری، 2019

ہلاک ہونے والے بھارتی فوجیوں کی تعداد 44 ہوگئی، تعداد بڑھ سکتی ہے: واقعے کی ذمہ داری کس نے قبول کی، جاننے کے لئے پڑھیں



ہلاک ہونے والے بھارتی فوجیوں کی تعداد 44 ہوگئی، تعداد بڑھ سکتی ہے: واقعے کی ذمہ داری کس نے قبول کی، جاننے کے لئے پڑھیں



مقبوضہ جمو کشمیر کے علاقے پلوامہ میں بھارتی فوجی گاڑی پر خود کش حملے میں ہلاک ہونے والے فوجیوں کی تعداد 44 تک جا پہنچی ہے، تاہم بعض زخمی ہیں اور مختلف فوجی ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ ہلاکتوں کی تعداد میں اضافہ ہوسکتا ہے۔ واقعے پر بھارت نے پاکستان کو مورد الزام ٹھہرایا ہے، تاہم واقعے کی ذمہ داری جیش محمد نے قبول کی ہے۔ بھارتی حکام پاکستان پر الزام لگا رہےہیں کہ پاکستان نے حملے کے لئے سہولت کاری کی ہے۔ خود کش کار بم دھماکے میں بھارتی کی سنٹرل ریزور پولیس فورس (سی آر پی ایف) کی گاڑی کو نشانہ بنایا تھا۔ جس سے فوجی گاڑی تباہ ہوگئی تھی اور فوجیوں کے چھیتڑے دور دور تک پھیل گئے تھے۔ ہزاروں کمشیریوں کا قاتل بھارت فوجیوں کی ہلاکت پا سیخ ہوگیا ہے۔ واقعے کے بعد بھارتی میڈیا زہر اگلنا شروع کیا ہے۔
ٹائمزآف چترال مانیٹرنگ ڈیسک






کار بم دھماکہ 18 بھارتی فوجی ہلاک ہوگئے، کشمیر میں بھارتی فوج پر خود کش حملے شروع
مقبوضہ کشمیر (ویب ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوجیوں پر خودکش حملے شروع ہوگئے۔ مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں کار بم دھماکے میں 18 بھارتی سیکیورٹی اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہو گئے۔
کشمیر میڈیا سروس کے مطابق سینٹرل ریزرو پولیس فورس کی بس پر کار بم دھماکا ضلع پلوامہ میں سری نگر جموں ہائی وے پر لٹھ پورا کے مقام پر ہوا۔
بھارتی پولیس حکام کے مطابق کار میں سوار حملہ آور نے دھماکہ خیز مواد سے بھری گاڑی سی آر پی ایف کی بس سے ٹکرائی اور پھر اسے دھماکے سے تباہ کر دیا۔  حکام کے مطابق دھماکے میں 18 سی آر پی ایف اہلکار ہلاک اور کئی زخمی ہوئے۔ زخمیوں کو بھارتی فوج کے 92 بیس اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے۔
دھماکے کے بعد بھارتی سیکیورٹی فورسز کی بڑی تعداد نے علاقے کا محاصرہ کر کے سرچ آپریشن شروع کر دیا ہے۔

کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں