15 مارچ، 2019

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں جمعہ کے دن 2 مساجد پر فائرنگ 42 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد زخمی ہوگئے، اسلامی ملک کے کھلاڑی بھی موجود تھے

 

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں جمعہ کے دن 2 مساجد پر فائرنگ 42 افراد جاں بحق جبکہ متعدد افراد زخمی ہوگئے، اسلامی ملک کے کھلاڑی بھی موجود تھے



نیوزی لینڈ (ویب ڈیسک + ٹائمزآف چترال )  نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ میں آج جمعہ کے دن وہاں کے مقامی وقت کے مطابق 1 بجکر 40 منٹ پر دہشت گرد نے مسجد پر دھاوا بول دیا۔ نیوزی لینڈ کے شہر کرسٹ چرچ میں یہ واقعہ پیش آیا ہے۔ ملزم نے دو مساجد کو نشانہ بنایا۔ جس میں 42 نمازی شہید ہوئے۔ جبکہ درجنوں زخمی ہیں، اس لئے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔ 



واقعے کے ایک عینی شاہد لین پینیہا جو مسجد کے قریب ہی موجود تھا نے بتایا کہ دہشت گرد کالے لباس میں ملبوس تھا جو مسجد میں داخل ہوا اور پھر میں نے فائرنگ کی کئی آوازیں سنیں۔ لوگ مسجد سے بھاگ رہے تھے۔ لین نے اے پی کو بتایا کہ اس کے بعد اس نے ہر جگہ لاش ہی لاش دیکھی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ گن مین دہشت گرد واردات کے بعد مسجد سے بھاگا اور بھاگتے بھاگتے اس نے اپنا آٹو میٹک گن پھینک دیا۔

نیوزی لینڈ کے شہر کرائسٹ چرچ کی مساجدپرسفید فام انہتا پسندوں کے حملے سے 42 سے زائد نمازی شہید ہوئے  جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں۔ حملہ آوروں نے خودکار میشن گنوں سے اس وقت اندھادھند فائرنگ کردی جب مساجد میں جمعہ کی نماز اداکی جارہی تھی۔ مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق ملزم نے اپنی شناخت آسٹریلوی شہری برینٹن ٹیرینٹ کے نام سے کی ہے،حملہ آورفوجی وردی میں ملبوس تھا،جس کی عمر 30 سے 40 سال تھی جبکہ ایک عورت سمیت اس کے4ساتھی شہر کے دوسرے علاقوں سے گرفتار ہوئے ہیں۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق  ملزم نے اپنے سوشل میڈیا اکاﺅنٹ سے اسلام اورمسلمان  مخالف مواد کے87صفحات پوسٹ کئے ہوئے ہیں جن میں لوگوں کو مسلمانوں پر حملوں کے لیے اکسایا جاتا ہے۔

نیوزی لینڈ کی  وزیرِ اعظم جاسنڈا آرڈرن نے اس واقعے کو تاریخ کا سیاہ ترین دن قرار دیا ہے۔

واقعے کے وقت  نیوزی لینڈ کے دورہ پر آئی بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم  کے کھلاڑی بھی یہاں موجود تھے۔  تمیم اقبال نے ایک ٹویٹ میں بتایا کہ  ہم وہاں سے بھاگ کر جان بچائی اور پوری ٹیم جان بچا نے میں کامیاب ہوئی ہے اور ہم محفوظ ہیں۔ بنگلہ دیشی ٹیم کے کھلاڑی فائرنگ کے وقت نماز جمعہ ادا کرنے کے لیے مسجد آئے ہوئے تھے‘پریس کانفرنس کرتے ہوئے بنگلا دیش کرکٹ ٹیم کے کپتان تمیم اقبال نے کہا کہ بنگلا دیشی کرکٹ ٹیم کے تمام کھلاڑی اس واقعے میں محفوظ رہے۔
بنگلا دیشی کرکٹر مشفق الرحیم نے اس موقع پر کہا کہ مسجد میں بنگلا دیشی ٹیم بھی موجود تھی جو اس واقعے میں محفوظ رہی، انہوں نے کہا کہ ہم بہت خوش قسمت رہے کہ فائرنگ کے اس واقعے میں اللہ تعالیٰ نے ہمیں محفوظ رکھا، ہم کبھی نہیں چاہیں گے کہ ایسا دوبارہ ہو۔

نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے بیان جاری کیا ہے جس میں انہوں نے کہا ہے کہ دونوں ملکوں نیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کے کھلاڑی محفوظ ہیں۔  نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے مزید کہا کہ  اگلے لائحہ عمل کے لیے حکام  کے ساتھ مل کر کام رہے ہیں کل سے شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ کے حوالے سے اقدامات پر بات چیت جاری ہے۔ حملے کے بعد نیوزی لینڈ اور بنگلا دیش کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان ہونے والا تیسرا ٹیسٹ  منسوخ کر دیا گیا ہے۔






کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں