اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

5 مارچ، 2019

مبارک ویلیج نے پاکستان لائف سیونگ فاؤنڈیشن (پالس ریسکیو) فٹبال ٹورنامنٹ 2019 جیت لیا

مبارک ویلیج نے پاکستان لائف سیونگ فاؤنڈیشن (پالس ریسکیو) فٹبال ٹورنامنٹ 2019 جیت لیا



کراچی (پی آر) پالس ریسکیو فٹبال ٹورنامنٹ 2019 میں ناقابل شکست رہنے والی ٹیم مبارک ویلیج نے فائنل میچ جیت لیا۔ فائنل میں مبارک ویلیج کا سامنا ہاکس بے کمبائن کی ٹیم سے ہوا جو عبدالرحمان گوٹھ کے بلیجی گراؤنڈ پر کھیلا گیا جسے مبارک ویلیج کی ٹیم نے صفر کے مقابلے میں ایک گول سے جیت لیا۔ میچ کا واحد گول مبارک ویلیج کے گوہر خان کی جانب سے کیا گیاجو انہوں نے میچ کے پہلے ہاف میں کیا۔ دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں نے بھرپور کھیل کا مظاہرہ کیا تاہم ہاکس بے کمبائن کے کھلاڑی گول کرنے میں ناکام رہے۔ فائنل میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے اور اکلوتا گول کرنے والے گوہر خان کو مین آف دی میچ کا ایوارڈ ملا۔ 

اختتامی تقریب میں محمد نعیم کو پلیئر آف دی ٹورنامنٹ جبکہ بابا دوشی کو ٹورنامنٹ کے بہترین کیپر کا ایوارڈ ملا۔ دونوں کھلاڑی مبارک ویلیج کی نمائندگی کررہے تھے۔ 

اختتامی تقریب میں علاقائی رہنما، سرکاری حکام، منتخب نمائندے اور کھیلوں کے شوقین افراد نے شرکت کی۔ فائنل میچ کے بعد انعامات تقسیم کرنے کی تقریب منعقد ہوئی جس میں فاتح ٹیم کو ٹرافی دی گئی اور نقد انعامات دیئے گئے۔ 

پالس ریسکیو کے بانی و پریذیڈنٹ رضا صمد نے کہا، "مقامی لوگوں میں فٹ بال انتہائی پسندیدہ کھیل ہے ۔ اس ٹورنامنٹ کا انعقاد ہمارے لئے انتہائی شاندار تجربہ رہا ہے کیونکہ اس سے متعلقہ تمام لوگوں پر غیرمعمولی اثرات مرتب ہوئے ہیں ۔ ہمیں خوشی ہے کہ پالس ریسکیو نے اس سرگرمی کے ذریعے لوگوں کو اکھٹا کرنے کے اعتبار سے اہم کردار ادا کیا ہے اور مختلف سطح پر مقامی لوگوں کی شمولیت میں سہولت فراہم کی ہے۔ ہمیں توقع ہے کہ پالس فٹ بال ٹورنامنٹ ان نوجوانوں کے لئے سالانہ تفریح کا بھی باعث ہوگا۔" 

پاکستان کے نجی شعبے میں لوگوں کو سمندر میں ڈوبنے سے بچانے کاکام کرنے والے واحد فلاحی ادارے پاکستان لائف سیونگ فاؤنڈیشن (پالس ریسکیو) کی جانب سے کراچی کی ساحلی پٹی پر واقع نوجوان ماہی گیروں کے لئے پہلے پالس فٹ بال ٹورنامنٹ 2019کا 25فروری سے آغاز ہوا ۔ اس ٹورنامنٹ میں آٹھ ٹیموں نے شرکت کی جن کے مابین مجموعی طور پر سات میچز کھیلے گئے۔ 

پاکستان لائف سیونگ فاؤنڈیشن (پالس ریسکیو) سال 2004 میں بطور فلاحی ادارہ قائم ہوا جس نے کراچی کے ساحلوں پر مفت امدادی کاموں کا آغاز کیا۔ پالس ریسکیو میں اس وقت 250 سے زائد انتہائی اعلیٰ تربیت یافتہ لائف گارڈز ہیں جو ماہی گیر برادری کی نمائندگی کرتے ہیں۔ مون سون سیزن میں لائف گارڈز کی ضرورت دو گنا ہوجاتی ہے۔ اس ادارے سے ایک ہزار سے زائد لائف گارڈز منسلک ہوچکے ہیں اور 5 ہزار سے زائد افراد کو ڈوبنے سے بچایا جاچکا ہے۔ اس کے ساتھ پالس ریسکیو ساحلوں پر آنے والے سالانہ 80 لاکھ سے زائد افراد کو بھی تحفظ فراہم کرتا ہے۔ 



کوئی تبصرے نہیں:
Write comments

خبروں اور ویڈیوز کے لئے ہماری ویب سائیٹ وزیٹ کیجئے: پوسٹ پر تبصرہ کرنے کے لئے شکریہ۔ آپ کا تبصرہ جائزے کے بعد جلد پیج پر نمودار ہوجائے گا۔ شکریہ

نوٹ: ٹائمزآف چترال کی انتظامیہ اور اداراتی پالیسی کا بلاگر کے خیالات سے متفق ہونا ضروری نہیں ہے۔ اگر آپ بھی چاہتے ہیں کہ آپ کا نقطہ نظر پاکستان اور دنیا بھر کے ناظرین تک پہنچے توآپ بھی قلم اٹھائیے اور 400 سے 700 الفاظ پر مشتمل اپنی تحریر تصویر، مکمل نام، فون نمبر، سوشل میڈیا آئی ڈیز اور اپنے مختصر مگر جامع تعار ف کے ساتھ ہمیں ای میل کریں ای میل ایڈریس timesofchitral@outlook.com آپ اپنے بلاگ کے ساتھ تصاویر اور ویڈیو لنک بھی بھیج سکتے ہیں۔

اپنے فیس بک آئی ڈی سے بھی آپ ویب سائیٹ پر کسی نیوز
یا بلاگ پر کومنٹ کرسکتے ہیں۔

تازہ ترین

مشہور اشاعتیں

loading...

تازہ ترین خبریں